Ba andaz-e-Meesam hadees-e-payambar
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Ba andaz-e-Meesum hadees-e-Payambar 
Sunatay rahay hain sunatay rahain gay
Ali dushmano ke kaleejon pe khanjar
Chalatay rahay hain chalatay rahain gay

Jisay sindh kehtay hain Ghazy ka ghar hay
Qalandar ke hathon alam ka safar hay
Zamanay ko ham bhi maqam-e-qalandar
Batatay rahay hain batatay rahain gay

Agar doar karni hain tum ko balayain
Nabi ke gharanay se kar lo wafayain
Yeh ahd-e-wafa hay jo Shian-e-Haider
Nibhatay rahay hain nibhatay rahain gay

Ali ke siwi koi aata nahi hay
Halakat se koi bachata nahi hay
Ba waqt-e-museebat Ali ko yeh nokar
Bulatay rahay hain bulatay rahain gay

Banayain gay sab munkiroon ko nishana
Zamanay may aa kar Imam-e-Zamana
Wohi zulfiqar-e-Hussain ibn-e-Haider
Chalatay rahay hain chalatay rahain gay

Woh kaisay Imam-e-Zamana ko manay
Woh kaisay Khuda ki mashiyyat ko janay 
Ulil amr ki masnadon par jo bandar
Nachatay rahay hain nachatay rahain gay

Jo Labnaniyon ki hay hizb-e-ilahi
Woh sehoniyon ke liye hay tabahi
Yeh janbaz Syed Hasan jaisay rehbar
Banatay rahay hain banatay rahain gay

Ajab intezam-e-Khuda wand dekha
Zafar dushmano ko bhi paband dekha
Ali teri jaye wiladat ke chakkar
Lagatay rahay hain lagatay rahain gay

با اندازِ میثم حدیثِ پیمبرؐ سناتے رہے ہیں سناتے رہیں گے
علیؑ دشمنوں کے کلیجوں پہ خنجر چلاتے رہے ہیں چلاتے رہیں گے

جسے سندھ کہتے ہیں غازیؑ کا گھر ہے۔ قلندر کے ہاتھوں علم کا سفر ہے
زمانے کو ہم بھی مقامِ قلندر۔ بتاتے رہے ہیں بتاتے رہیں گے 

اگر دور کرنی ہیں تم کو بلائیں۔ نبیؐ کے گھرانے سے کر لو وفائیں
یہ عہدِ وفا ہے جو شیعانِ حیدرؑ۔ نبھاتے رہے ہیں نبھاتے رہیں گے

علیؑ کے سوا کوئی آتا نہیں ہے۔ ہلاکت سے کوئی بچاتا نہیں ہے
با وقتِ مصیبت علیؑ کو یہ نوکر۔ بلاتے رہے ہیں بلاتے رہیں گے

بنائیں گے سب منکروں کا نشانہ۔ زمانے میں آکر امامِ زمانہؑ
وہی ذوالفقارِ حسین ابنِ حیدرؑ۔ چلاتے رہے ہیں چلاتے رہیں گے

وہ کیسے امامِ زمانہ کو مانیں۔ وہ کیسے خدا کی مشیت کو جانیں
اولی الامر کی مسندوں پر جو بندر۔ نچاتے رہے ہیں نچاتے رہیں گے

جو لبنانیوں کی ہے حزبِ الٰہی۔ وہ صیہونیوں کے لئے ہے تباہی
یہ جانباز سید حسن جیسے رہبر۔ بناتے رہے ہیں بناتے رہیں گے

عجب انتظامِ خداوند دیکھا۔ ظفر دشمنوں کو بھی پابند دیکھا
علیؑ تیری جائے ولادت کے چکر۔ لگاتے رہے ہیں لگاتے رہیں گے