Likhay ga manqabat ab koi kia Masooma e Qom ki
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

لکھے گا منقبت اب کوئی کیا معصومہ قم کی
کہ جب اللہ کرتا ہے ثناء معصومہ قم کی

ہے سکہ میرے بازو پر بندھا سلطانِ مشہد کا
یوں میرے ساتھ رہتی ہے دعا معصومہ قم کی

اگر پوچھیں رضا تیری رضا کیا ہے تو کہدوں گا
مجھے خدامی کردیجیے عطا معصومہ قم کی

تیری تعویذِ تربت پر رکھا قرآن کہتا ہے
تلاوت کررہی ہے انما معصومہ قم کی

کریموں میں کریمہ اور معصوموں میں معصومہ
خصوصیت ہے یہ زینب کی یا معصومہ قم کی

نزول آیہ تطہیرِ ثانی ہوگیا ہوتا
ردا جو اوڑھتے مولا رضا معصومہ قم کی

سرِ زہرا سے آئی تھی ردائے ثانی زہرا
سر زینب سے آئی ہے ردا معصومہ قم کی

اجالے میرے پیچھے پیچھے خود چلتے چلے آئے
جلا آیا تھا چوکھٹ پر دیا معصومہ قم کی

درِ زہرا پہ ہے ماتم کی یہ پابندیاں جب تک
عزا زہرا کی ہے تب تک عزا معصومہ قم کی

فرشتے میری جانب سے ادا کرتے رہے سجدے
ثناء جب تک حسن کرتا رہا معصومہ قم کی