Ho mubarak tumhe ya Nabi bibi Zehra ki hai rukhsati
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Ho mubaarak tumhe ya nabi
Bibi Zehra ki hai rukhsati
Dulha Haidar bana Zehra dulhan bani
Ho mubaarak tumhe ya nabi
Aaj Zehra ki hai rukhsati
Mubaarak mubaarak mubaarak mubaarak

Is ke chehre ka ghaaza bani hai hayaa
Is ke maathe ka jhumar hai alhamd ka
Innama iske haathon ka kangan banaa
Dekhiye to guluband hai kulkafaa
Khalq me na mili aisi dulhan koyi

Aayaton se libaase aroosi banaa
Noor chehre pe aaya hai wal fajr ka
Aur kalaayi ka zevar bani hal ataa
Goshwaare muzammil ke hain ba khuda
Saj gayi fatema parh ke naade ali

Aaj dharti falak se siwa ho gayi
Ye zameen ka muqaddar bhi dekhe koyi
Sab yahaan aa gaye khuld khaali huwi
Aaj khayrun nisa aisi dulhan bani
Aisa dulha banaa aaj haq ka wali

Aisa dulha kahaan aisi dulhan kahaan
Jin ki khushiyon me shaamil hai kaun o makaan
Jagmagaane lagin arsh par kehkashaan
Chaand dene lagaa aaj khud hi azaan
Muskura kar sada ye sitaaron ne di

Mominon ke liye hai khushi ki khabar
Gehma gehmi machi hai payambar ke ghar
Khush hain salmaan o miqdaad o buzar udhar
Shaadmaani hai chehron pe sab ke magar
Jalne waalon ke dil par tchuri chal gayi

Tehniyat ko chale arsh se ambiya
Aur Mohammad ke dar par kiya jamghataa
Aake jibreel ne arsh se ye kahaa
Keh raha hai khuda ay habibe khuda
Leke baaraat ko aa rahe hain ali

ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ
بی بی زہراؑ کی ہے رخصتی
دولہا حیدرؑ بنا ، زہراؑ دلہن بنی
ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ
آج زہراؑ کی ہے رخصتی
مبارک مبارک مبارک مبارک

اِس کے چہرے کا غازہ بنی ہے حیاء
اِس کے چہرے کا جھومر ہے الحمد کا
اِنَّما اسکے ہاتھوں کے کنگن بنے
دیکھئے تو گلوبند ہے قُل کفا
   خلق میں نہ ملی ، ایسی دلہن کوئی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

آیتوں سے لباسِ عروسی بنا
نور چہرے پہ آیا ہے والفجر کا
اور کلائی کا زیور بنی ہے عطا	
گوشوارے مزمّل کے ہیں با خدا
   سج گئی فاطمہؑ ، پڑھ کے نادِعلیؑ 
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

آج دھرتی فلک سے سوا ہو گئی
یہ زمیں کا مقدر بھی دیکھے کوئی
سب یہاں سے گئے خلد خالی ہوئی
آج خیرالنساءؑ ایسی دلہن بنی
   ایسا دولہا بنا ، آج حق کا ولی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

ایسا دولہا کہاں ایسی دلہن کہاں
جن کی خوشیوں میں شامل ہیں کَون و مکاں
جگمگانے لگیں عرش پر کہکشاں 
چاند دینے لگا آج خود ہی اذاں
   مسکرا کر صدا ، یہ ستاروں نے دی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

مومنوں کے لئے بھی خوشی کی خبر
گہما گہمی مچی ہے پیمبرؐ کے گھر
خوش ہیں سلمان و مقداد وبوذر اُدہر
شادمانی ہے سب کے چہروں پہ مگر 
   جلنے والوں کے دل ، پر چھری چل گئی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

تہنیت کو چلے عرش سے انبیاء
اور محمدؐ کے در پر کیا جمگھٹا
آ کے جبریلؐ نے عرش سے یہ کہا
کہہ رہا ہے خدا کہ حبیبِ خداؐ
   لے کے بارات کو ، آرہے ہیں علیؑ 
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

لے کے بارات شیرِ خداؑ آگئے
لینے اپنی دلہن مرتضیٰؑ آگئے
ملنے حیدرؑ سے سب انبیاء آگئے
پیشوائی کو خود مصطفیؐ آگئے
   مارا جبریلؑ نے ، نعرہءِ حیدریؑ 
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

پھر وہ لمحے خوشی کے قریب آگئے
مصطفیٰؐ صیغہءِ عقد پڑھنے لگے
خود بہ خود عکس سارے قصیدے بنے
سب مراحل بہ حسن و خوشی طے ہوئے
   مرضیءِ کبریا ، حق مہر بن گئی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

گنگناتی فضا گنگناتی ہوا
آگے آگے ہیں بارات کے انبیاء
اور خدیجہ نے آنچل کا سایہ کیا
خم کے ساغر چھلکنے لگے جا بجا
   پیٹی رخصت ہوئی ، آنکھ نم ہو گئی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ

کس قدر خوش ہیں فرحان و ظلِ رضا
حقِّ مدحت بھی یوں ہو رہا ہے ادا
اُس کی زوجہ بنی آج خیر النساء
جس کو کہتے ہیں سب مظہرِ کبریا
   شورِ صلِ علیٰ ، میں ہوئی رخصتی
   ہو مبارک تمہیں یا نبیؐ