Jashn is tarha se Zehra ka manaya jaye
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

جشن اِس طرح سے زہراؑ کا منایا جائے
کہ آسمانوں کو زمینوں پہ بچھایا جائے

دل یہ کہتا ہے کہ آتے ہی کہیں گے مولاؑ
ہیں کہاں دشمنِ زہراؑ اِنہیں لایا جائے

روٹیاں دے کے کہا ہو گا یہ زیراؑ نے کہ بس
کھانا غیبت میں یہ مہدیؑ کو کھلایا جائے
رزق مہدیؑ کو یہ غیبت میں کھلایا جائے

گونج اٹھے آج گلستانِ جنابِ زہراؑ
نعرہ حیدرؑ کا کچھ اِس طرح لگایا جائے

ٹوک کر حضرتِ جبریلؑ کو بولی فضّہؑ
بیتِ زہراؑ ہے یہاں پوچھ کے آیا جائے

Jashn is tarha se Zehra ka manaya jaye
Ke aasmano ko zameeno pe bichaya jaye

Dil ye kehta hay ke aatay hi kahain gay Maula
Hain kahan dushman (munkir) e Zehra unhay laaya jaye

Rotian de ke kaha ho ga ye Zehra ne ke bas
Khana ghaibat may ye Mehdi ko khilaya jaye
(Rizq Mehdi ko ye ghaibat may khilaya jaye)

Goonj uthay aaj gulistan e Janab e Zehra
Naara Haider ka kuch is tarha lagaya jaye

Toak kar Hazrat e Jibreel ko boli Fizza
Bait e Zehra hay yahan pooch ke aaya jaye