Sehra Mola Abbas(as)
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Aey wafa leke hawa
Gulshane firdaus se chal
Ai nazar maldue shab deeda ke chungal se niikal
Ai khiradh manzile taqdeeso taharat hai sambhal
Ai yaqee teri aqidat ka milega tujhe phal
Fikre nau arsh talak karke safar aayi hai
Mola Abbas ki shadi ki khabar aayi hai (x2)

1) wo mohabbat thi wo chahat thi wo ulfat thi wo pyaar
   ye fida bhaiyo pe bhai bhi sab inpe nisaar
   ali izhare khuda hai ye ali ka izhar
   apni behno ke liye bangaye kalme ka hisaar
   chaaha behno ne ke ghar me ye ujaala dekhe
   sher se bhai ki peshani pe sehra dekhe (x2)

2) ye jabeen wo hai ke bandhne ko hai jispar sehra
   choo ke peshani ke hoga wo munawwar sehra
   jisse kehlaaega suraj ke barabar sehra
   ghar me Haider ke hai anwaar ka mazhar sehra
   Shehre Yasrab me jo aasaar nazar aate hain
   aaj yusuf bhi khareedar nazar aate hai (x2)

3) Sar pe Abbas ke Shabbar ne amama bandha
   Ye amama hi tha Ghazi ke liye taaj e wafa
   Doshe Abbas pe Shabbir ne tab daali aba
   Ye aba wo thi ke jo ban gayi behno ki rida
   Kyun na wo naaz kare jisko sajaye Shabbir
   Aey khusha wo ke jise dulha banaye Shabbir (x2)

4) Ban ke jannat ke gulabon se jo aaya sehra
   Aur haseen madare Ghazi ne banaya sehra
   Shohare Hazrate Zainab ne uthaya sehra
   Farq e Abbas pe Shabbar ne sajaya sehra
   Chaand ne Ghazi ke sehre ki balaae le leen
   Barrh ke suraj ne chamakne ki adayeen le leen (x2)

5) Sehra Ghazi ke bandha arsh talak baat chali
   Ghul sawere ka hua sue adam raat chali
   Aik ik hoor liye hatho me saugaat chali
   Sher baarati bane Sher ki baraat chali
   Nur sadqe ke liye arsh ne bhijwaya hay
   Sajda karne ke liye burje Asad aaya hai (x2)

6) Zabt o eesar ke suroon ne sajaya sehra
   Ayatain banke wafa ne bhi sunaya sehra
   Lauhe mahfooz se likhha hua aaya sehra
   Leke Dawood se Quran ne gaya sehra
   Ja ke Jibreel ne har samt zakatain baateen
   Malakul maut ne us roz hayaatain baanten (x2)

7) Tum samajhte ho ke Majid ne kaha hay sehra
   Mujhko Jibreel ke hatho se mila hay sehra
   Lauh par daste ilaahi ne likha hay sehra
   Lehne Dawood jo paaya hai to parrha hay sehra
   Wo jaza payi na ab dar kisi waswaas ka hay
   Shadma sehra bhi to hazrate Abbas ka hai (x2)

اے وفا لے کے ہوا گلشنِ فردوس سے چل 
آئی نظر مرزوئے شب دیدا كے چنگل سے 
اے خرد منزلِ تقدیسِ طہارت ہے سنبھل 
اے یقیں تیری عقیدت کا ملے گا تجھے پھل 
فکرِ نو عرش تلک کرکے سفر آئی ہے 
مولا عباسؑ کی شادی کی خبر آئی ہے 

وہ محبت تھی وہ چاہت تھی وہ الفت تھی وہ پیار 
یہ فدا بھائیوں پہ بھائی بھی سب اِن پہ نثار 
علیؑ اظہارِ خدا ہیں یہ علیؑ کا اظہار 
اپنی بہنوں كے لیے بن گئے کلمے کا حصار 
چاہا بہنوں نے كہ گھر میں یہ اُجالا دیکھیں
شیر سے بھائی کی پیشانی پہ سہرا دیکھیں

یہ جبیں وہ ہے كہ بندھنے کو ہے جس پر سہرا 
چھو كے پیشانی كو ھوگا وہ منور سہرا 
جس سے کہلائے گا سورج كے برابر سہرا 
گھر میں حیدرؑ كے ہے انوار کا مظہر سہرا 
شہرِ یثرب میں جو آثار نظر آتے ہیں 
آج یوسفؑ بھی خریدار نظر آتے ہیں

سَر پہ عباسؑ كے شبرؑ نے عمامہ بندھا 
یہ عمامہ ہی تھا غازیؑ كے لیے تاجِ وفا 
دوشِ عباسؑ پہ شبیرؑ نے تب ڈالی عبا 
یہ عبا وہ تھی كہ جو بن گئی بہنوں کی ردا
کیوں نہ وہ ناز کرے جس کو سجائے شبیرؑ
اے خوشا وہ كہ جسے دولہا بنائے شبیرؑ

بن كے جنت كے گلابوں سے جو آیا سہرا 
اور حَسِین مادرَِغازیؑ نے بنایا سہرا 
شوہرِ حضرتِ زینبؑ نے اٹھایا سہرا 
فرقِ عباسؑ پہ شبرؑ نے سجایا سہرا 
چاند نے غازیؑ كے سہرے کی بلائیں لے لیں 
بڑھ كے سورج نے چمکنے کی ادائیں لے لیں 

سہرا غازی كے بندھا عرش تلک بات چلی 
غل سویرے کا ہوا سُوئے عدم رات چلی 
ایک اک حور لیے ہاتھوں میں سوغات چلی 
شیر باراتی بنے شیر کی بارات چلی 
نور صدقے كے لیے عرش نے بھجوایا ہے 
سجدہ کرنے كے لیے برجِ اسد آیا ہے 

ضبط و ایثار كے سُوروں نے سجایا صحرا 
آیتیں بنکے وفا نے بھی سنایا صحرا 
لوحِ محفوظ سے لکھا ہوا آیا صحرا 
لے کے داؤدؑ سے قرآن نے ہے گایا صحرا 
جا كے جبریلؑ نے ہر سمت زکاتیں بایٹیں
الک الموت نے اُس روز حیاتیں بانٹیں 

تم سمجھتے ہو كہ ماجد نے کہا ہے سہرا 
مجھکو جبریلؑ كے ہاتھوں سے ملا ہے سہرا 
لوح پر دستِ الٰہی نے لکھا ہے سہرا 
لحنِ داؤد جو پایا ہے پڑھا ہے سہرا 
وہ جزا پائی نہ اب ڈر کسی وسواس کا ہے 
شادماں سہرا بھی تو حضرتِ عباسؑ کا ہے