Aa gaye Murtaza khush hay deen e Khuda
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Aa gaye Murtaza khush hay deen e Khuda
Ab koi tilmilaye to may kia karoon
La makaan ke makaan may makeen aa gaya
Gham kisi ko ye khaye to may kia karoon

Dushmanan e Ali se ye hanstay huay
Aik talay ne taali bajay kar kaha
Kaaba Haider ke aanay ki sun kar khabar
Hans ke khud dar banaye to may kia karoon

Ya Ali keh ke utri to maidan may
Jeet us ke muqaddar may likh di gayi
Teray lab par nahi naara e Haidry
Tu agar munh ki khaye to may kia karoon

Ye Rasool e Khuda se alam ne kaha
May to lehraoon Khaibar may Maula magar
Taigh ho hath may fouj ho sath may
Koi phir bhaag jaye to may kia karoon

Naam gohar hay mera meri shaan se
Jis ka jee chahay wo jagmagaey magar
Ishq e Haider ki noorani barsat may
Koi khud na nahaey to may kia karoon

آ گئے مرتضیٰؑ خوش ہے دین خدا 
اب کوئی تلملائے تو میں کیا کروں 
لا مکان كے مکان میں مکین آ گیا 
غم کسی کو یہ کھائے تو میں کیا کروں 

دشمنِ علیؑ سے یہ ہنستے ہوئے 
ایک تلے نے تالی بجا کر کہا 
کعبہ حیدرؑ كے آنے کی سن کر خبر 
ہنس كے خود دَر بنائے تو میں کیا کروں 

یا علیؑ کہہ كے اتری تو میدان میں
جیت اس كے مقدر میں لکھ دی گئی 
تیرے لب پر نہیں نعرہ حیدری 
تو اگر منه کی کھائے تو میں کیا کروں 

یہ رسولِؐ خدا سے علم نے کہا 
میں تو لہراؤں خیبر میں مولا مگر 
تیغ ہو ہاتھ میں فوج ہو ساتھ میں
کوئی پِھر بھاگ جائے تو میں کیا کروں 

نام گوہر ہے میرا میری شان سے 
جس کا جی چاھے وہ جگمگائے مگر 
عشقِ حیدرؑ کی نورانی برسات میں
کوئی خود نہ نہائے تو میں کیا کروں