Naad e Aliyan mazharal ajaib
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



نادِ علیاً مظہر العجائب

پہرہ اِلٰہیات پہ نادِ علیؑ کا ہے
اِک خوف مشکلات پہ نادِ علیؑ کا ہے
سایہ عجائبات پہ نادِ علیؑ کا ہے
احسان کائنات پہ نادِ علیؑ کا ہے
ہے ورد دھڑکنوں کا یہی یا علیؑ مدد
نادِ علی سمٹ کے بنی یا علیؑ مدد

آدم سے کر رہا ہے سفر یا علیؑ مدد
ہے مرتضیؑ کے زیرِ اثر یا علیؑ مدد
تعویز ہے پہن لو اگر یا علیؑ مدد
کرتا ہے مشکلات کو سَر یا علیؑ مدد
محشر میں جب نماز بھی دامن چھڑائے گی
بس یا علیؑ مدد کی صدا کام آئے گی

اللہ نے علیؑ کو بنایا ہے معتبر
کیوں آگ لگ رہی ہے تجھے اِس کے نام پر
شک ہے اگر علیؑ کے فضائل پہ اسقدر
مُلا یہ روز روز کے جھگڑے تمام کر
دَم ہے اگر گرا دے یہ کعبہ علیؑ کا ہے
قرآن کو جلا دے قصیدہ علیؑ کا ہے

حوزہ ہے جو علوم کا وہ شخصیت علیؑ
معبود نے لکھی ہے جو وہ منقبت علیؑ
پہچان جس سے رب کی ہو وہ معرفت علیؑ
ذاتِ خدا جلی ہے جلی کی صفت علیؑ
معراجِ مصطفیؐ کا جو پردہ اٹھائے گا
اللہ نہیں علیؑ ہی نظر تجھ کو آئے گا

وہ کون ہے علیؑ نے کہا ہے جسے علیؑ
کس کے قدم قدم سے لپٹ کر وفا چلی
جس نے سپاہِ شام سے ہر سانس کھینچ لی
امُ البنیںؑ کا چاند وہ ولیوں کا ہے ولی
کہتی ہے کربلا یہ تعارف اُسی کا ہے
عباسؑ نام دوسرا نادِ علیؑ کا ہے

ایمان کی زُبان سے نادِ علیؑ پڑھو
ہو دُور سائبان سے نادِ علیؑ پڑھو
جینا ہے اِطمنان سے نادِ علیؑ پڑھو
لڑنا ہے طالبان سے نادِ علیؑ پڑھو
گر اِس صدا کو جنگ کا نعرہ بناؤ گے
ہر دور کے یزید کے چھکے چھڑاؤ گے

Naad e Aliyan mazharal ajaib

Pehra ilahiyat pe Naad e Ali ka hay
Ik khoof mushkilaat pe Naad e Ali ka hay
Saaya ajaibat pe Naad e Ali ka hay
Ihsan kainaat pe Naad e Ali ka hay
Hay wird dharrkanon ka yehi Ya Ali madad
Naad e Ali simat ke bani Ya Ali madad

Adam se kar raha hay safar Ya Ali madad
Hay Murtaza kay zair e asar Ya Ali madad
Taweez hay pahan lo agar Ya Ali madad
Karta hay mushkilaat ko sar Ya Ali madad
Mehshar may jab namaz bhi daman churrayi gi
Bas Ya Ali madad ki sada kaam aayay gi

Allah ne Ali ko banaya hay moatabar
Kyun aag lag rahi hay tujhe is ke naam par
Shak hay agar Ali ke fazael pe is qadar
Mulla ye roz roz ke jhagrray tamam kar
Dam hay agar gira day ye Kaaba Ali ka hay
Quran ko jala day qaseeda Ali ka hay

Hauza jo hay uloom ka wo shakhsiyat Ali
Mabood ne jo likhkhi hay wo manqabat Ali
Pehchan jis se Rab ki ho wo maarifat Ali
Zaat e Khuda jali hay jali ki sifat Ali
Mairaj e Mustafa ka jo parda uthaey ga
Allah nahi Ali hi nazar tujh ko aaye ga

Wo koun hay Ali ne kaha hay jisay Ali
Kis ke qadam qadam se lipat kar wafa chali
Jis ne sipah e Shaam se har saans cheen li
Ummul Baneen ka chand wo waliyon ka hay wali
Kehti hay Karbala ye taurruf usi ka hay
Abbas naam doosri Naad e Ali ka hay

Emaan ki zuban se Naad e Ali parrho
Ho door saiban se Naad e Ali parrho
Jeena hay itmenan se Naad e Ali parrho
Larrna hay Taliban se Naad e Ali parrho
Gar is sada ko jang ka naara banayo gay
Har doar ke Yazeed ke chakkay churrao gay