Tujhe jhoola jhulaon mein tujhay jhoola jhulaon
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Ya Hussain, Ya Hussain Ya Hussain, Ya Hussain 

Mein jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon
Mein khuwaab mein Asghar tujhay, lori bhi sunaoon
Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

1. Laut aao safar sey ke badi deyr huwi hay
   Betaab hu kabsey tujhay seenay sey lagaoon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

2. Koi mujhay batlata nahi teri nishani
   Barsaat mein teeroon ki kahan dhoondnay jaon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

3. Socha tha teri saalgirah ghar mein karoongi
   Taqdeer yeh kehti hay tera soug manaoon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

4. Baba say teray tera janaza na uthayga
   Ruk ja zara Abbas ko dariya sey bulaon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

5. Yeh Khoon mein bhara kurta, yeh matti mein bharay baal
   Seenay mein chupaon ke mein aankhoon sey lagaoon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

6. Iss tarha Koi rooth ke maa sey nahi jata
   Tu Khud he bata dey mein tujhay kaisay manaoon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

7. Rehan ke nohay sey sada baano ki ayee
   Mein aankhoon sey askhkoon ke samander ko bahaoon
   Tujhay jhoola jhulaon, mein tujhay jhoola jhulaon

تجھے جھُولا جھُلاؤں میں تجھے جھُولا جھُلاؤں
میں خواب میں اصغرؑ تجھے لوری بھی سُناؤں

لوٹ آئو سفر سے کہ بڑی دیر ہوئی ہے
بیتاب ہوں کب سے تجھے سینے سے لگاؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

کوئی مجھے بتلاتا نہیں تیری نشانی
برسات میں تیروں کی کہاں ڈھونڈنے جاؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

سوچا تھا تیری سالگرہ ہر میں کروں گی
تقدیر یہ کہتی ہے تیرا سوگ مناؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

بابا سے تیرے تیرا جنازہ نہ اُٹھے گا
رُک جا ذرا عباسؑ کو دریا سے بلاؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

یہ خوں بھرا کُرتا یہ مٹی میں بھرے بال
سینے میں چھُپاؤں کہ میں آنکھوں سے لگاؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

اس طرح کوئی روٹھ کے ماں سے نہیں جاتا
تُو خود ہی بتا دے میں تجھے کیسے مناؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔

ریحان کے نوحے پہ صدا بانو کی آئی
میں آنکھوں سے اشکوں کے سمندر کو بہاؤں
تجھے جھُولا جھُلائوں ۔۔۔