Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Boli khatun-e-jina, yani Shabbir ki maa, mera bacha hay kahan
Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

1. Lay gaya ghar se ek pyaase ko, Rab ke mehboob ke nawase ko
   Chor ker aagaya laeeno me, Gham zada maa ke tu assase ko
   Dhund ne jaoon usay, is andhere me kaha(n)
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

2. Jis ne lashe uthaye the din bhar, khune asghar tha jiske chehre par 
   Zakhme akbar ki thi anni dil me, bhayi ki gham me jhuk gayi thi kamar, 
   Khaak urhaate hai nabi, hai ali mehve fughaa, 
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

3. Raqibe dosh mustafa tha wo, tujhko bachpan se chahata tha wo
   Saath kyu(n) aaj uska chor diya, jabke mushkil me agaya tha wo
   Bewafayi ka sabab, kya karu(n) tujhko bayaa(n)
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

4. Tere mathe pe khun hai kiska, rang khu(n) ye tere sawaar ka tha
   Hai mere shir ki mehek usme, kampta hai alam se dil mera, 
   Bol khamosh hai kyu(n), tere asu(n) hai rawaa
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

5. Jo teri pyaas par udaas raha, ho ke paani ki aaspaas raha
   Phir bhi paani piyaa nahi usne, teri khatir wo mehwe yaas raha
   Khushk tha uska ghala, khushk thi uski zabaan 
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

6. Kaise soyegi ladli uski, jisko sine pa neend aati thi
   Jisne roka tha tujhko jaate huwe, kya kahega agar wo puchhegi
   Samna uska na kar, roke dedegi wo jaan
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

7. Qalb Zainab kaheen fighar na ho, dilpe ehle haram ke waar na ho
   Tu jo khayme me jayenga khali, kon hai jo, ke soghwaar na ho
   Tu jo jaayega wahaan, hashr ka honga samaan 
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

8. Na gawaa sar sina pe aayaa nazar, zikre khaliq tha jiske honto par
   Thaam kar dil larazte haathon se, boli Rehan madare sarwar
   Tujhse ay aspe jhari, ab na puchengi ye maa 
   Mera bachaa hay kahan
   Zuljana aey zuljana Mera bacha hay kahan (x2)

بولی  خاتونِ  جناں  یعنی  شببرؑ  کی  ماں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 
ذوالجناح  اے   ذوالجناح  میرا  بچہ  ہیں  کہاں 
بولی  خاتون   جناں  یعنی  شببرؑ  کی  ماں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

لے  گیا  گھر  سے  ایک  پیاسے  کو  رب  کے  محبوب  کے  نواسے  کو  
چھوڑ  کر  آ  گیا  لعینوں  میں  غم  زدہ  ماں  کے  تو  اثاثے  کو  
ڈھونڈنے  جائوں  اسے  اس  اندھیرے  میں  کہاں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

جس  نے  لاشے  اٹھائے  تھے  دن  بھر  خونِ  اصغرؑ  تھا  جس  کے  چہرے  پر  
زخم  اکبرؑ  کی  تھی  انی  دل  میں  بھائی  کی  غم  میں  جھک  گئی  تھی  کمر  
خاک  اڑاتے  ہے  نبی  ہے  علیؑ  محو  فغاں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

راقبِ  دوشِ  مصطفیٰ  تھا  وہ  تجھ  کو  بچپن  سے  چاہتا  تھا  وہ  
ساتھ  کیوں  آج  اسکا  چھوڑ  دیا  جب  کے  مشکل  میں  آ  گیا  تھا  وہ  
بیوفائی  کا  سبب  کیا  کروں  تجھ  کو  بیاں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

فاطمہ  زہراؑ

تیرے  ماتھے  پہ  خون  ہے  کس  کا  رنگ  خوں  یہ  تیرے  سوار  کا  تھا  
ہے  میرے  شیر  کی  مہک  اس  میں  کانپتا  ہے  الم  سے  دل  میرا  
بول  خاموش  ہے  کیوں  تیرے  آنسو  ہے  رواں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

جو  تیری  پیاس  پر  اداس  رہا  ہو  کے  پانی  کی  آس  پاس  رہا  
پھر  بھی  پانی  پیئا  نہیں  اس  نے  تیری  خاطر  وہ  مہوِ  یاس  رہا  
خشک  تھا  اس  کا  گلا  خشک  تھی  اس  کی  زبان  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

کیسے  سوئے  گی  لاڈلی  اس  کی  جس  کو  سینے  پہ  نیند  آتی  تھی  
جس  نے  روکا  تھا  تجھ  کو  جاتے  ہوئے  کیا  کہے  گا  اگر  وہ  پوچھے  گی  
سامنا  اس  کا  نہ  کر  روک  دے  گی  وہ  جہاں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

قلب  زینبؑ  کہیں  فگار  نہ  ہو  دل  پہ  اہل  حرم  کے  وار  نہ  ہو  
تو  جو  خیمے  میں  جائے  گا  خالی  کون  ہے  جو  کے  سوگ  وار  نہ  ہو  
تو  جو  جائے  گا  وہاں  حشر  کا  ہو  گا  سماں  میرا  بچہ  ہے  کہاں 

ناگواں  سر  سنا  پہ  آیا  نظر  ذکرِ  خالق  تھا  جس  کے  ہونٹوں  پر  
تھام  کر  دل  لرزتے  ہاتھوں  سے  بولی  ریحان  مادرِ  سرور  
تجھ  سے  اے  اسپِ  جری  اب  نہ  پوچھے  گی  یہ  ماں   میرا  بچہ  ہے  کہاں  

ذوالجناح  اے  ذوالجناح  میرا  بچہ  ہے  کہاں