Jafar ka ronay walo taboot uth raha hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



جعفرؑ کا رونے والوں تابوت اُٹھ رہا ہے
پھر فاطمہؑ کے گھر میں فرشِ عزا بچھا ہے

کاظمؑ تڑپ تڑپ کر یہ بین کر رہے ہیں
افسوس میرا بابا مجھ سے بچھڑ گیا ہے

مثلِ حسنؑ جِگر ہے جعفرؑ کا ٹکڑے ٹکرے
حاکم نے زہر ہائے معصوم کو دیا ہے

ہر ظلم سہہ رہے ہیں جعفرؑ امامِ صادقؑ
فرزندِ سیدہؑ پر کیسا ستم ہوا ہے

ہر ظلم کلمہ گو نے سادات پر ہے ڈھایا
اولادِ مصطفیؐ پر غربت کی انتہا ہے

قیدِ ستم میں جعفرؑ روتے ہیں شاہِ دین کو
مولا کی چشمِ تر میں صحرا کربلا ہے

کہہ دو محب یہ جا کر کم ظرف مفتیوں سے
سب سے بڑی عبادت ماتم حسینؑ کا ہے۔

(شاعر محب فاضلی )