Aey Rabb e Jahan Panjtan e Pak ka sadqa
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Aae Rab e jahan panjitan e paak ka sadqa
Iss qoum ka daman gham e shabir say bhar day
 
Bachoon ko aata ker Ali Asghar ka tabassum
Burhoon ko Habib Ibn e Mazahir ki nazar day
 
Kamsin ko milay walwalaye auno Muhammad
Har eik jawan ko Ali Akbar ka jigar day
 
Maoon ko sikha saniy e Zahra ka saliqa
Behnoon ko Sakina ki duaoon ka asar day
 
Maula tujhay Zainab ki asiri ki qasam hai
Bay jurm asiroon ko rahai ki khabar day
 
Jo chadar e Zainab ki azadar hain mola
Mehfooz rahein aisi khawateen kay parday
 
Jo deen kay kam aayein woh aulad aata ker
Jo majlisay Shabir ki khatir ho woh ghar day
 
Muflis pay zaro lal jawahir ki ho barish
Maqrooz ka har qarz ada ghaib say ker day
 
Gham koi na day humko siwa e gham e Shabir
Shabir ka gham bant raha hai to idhar dey

اے  ربِ  جہاں  پنجتنِ  پاکؑ  کا   صدقہ 
اس  قوم  کا  دامن  غمِ  شبیرؑ  سے  بھر  دے 

بچوں  کو  عطا  کر  علی  اصغرؑ  کا  تبسّم 
بوڑھوں  کو  حبیب  ابنِ  مظاھرؑ  کی  نظر  دے 

کمسِن  کو  ملے  ولولہءِ عونؑ  و  محمّدؑ
ہر  ایک  جوان  کو  علی  اکبرؑ  کا  جگر  دے 

ماؤں  کو  سکھا  ثانیِ  زہرا  کا  سلیقہ 
بہنوں  کو  سکینہؑ  کی  دعاؤں  کا  اثر  دے 

مولا  تجھے  زینبؑ  کی  اسیری  کی  قسم  ہے 
بے  جرم  اسیروں  کو  رہائی  کی  خبر  دے  

جو  چادرِ  زینبؑ  کی  عزادار  ہیں  مولا
محفوظ  رہیں  ایسی  خواتین  کے  پردے 

جو  دین  کے  کام  آئیں  وہ  اولاد  عطا  کر 
جو  مجلسِ  شبیرؑ  کی  خاطر  ہو  وہ  گھر  دے 

مفلس  پہ  زر  و  لال  جواہر  کی  ہو  بارش 
مقروض  کا  ہر  قرض  ادا  غیب  سے  کر  دے 

غم  کوئی  نہ  دے  ہم  کو  سواے  غمِ  شبیر 
شبیرؑ  کا  غم  بانٹ  رہا  ہے  تو  ادھر  دے