Aey chand Muharram ke tu badli may chala ja
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



اے چاند محرم کے تو بدلی میں چلا جا
تجھے دیکھ کے مر جائے نہ بیمار ہے صغراؑ

گھر زہراؑ کا لٹنے کی، خبر تو نے سنائی
تجھے دیکھ کے روتی ہے، محرم میں خدائی
چودہ سَو برس بیتے، سب کرتے ہیں شکوہ

ملنے کے لئے بھائی، کو بےچین بڑی ہے
کب سے علی اکبرؑ کی، یہ راہوں میں کھڑی ہے
بچھڑی ہے یہ مدت سے، اِسے تو نہ نظر آ

ویران گھروں میں نہ، اِسے نیند ہے آتی
اکبرؑ کی جدائی ہے، اِسے خوب رلاتی
قدموں کے نشاں ڈھانپ کے، بیٹھی ہے سرِ راہ

بھیا کی جدائی میں، پریشان ہے رہتی
ہر روز یہ نانا کو، رو رو کے ہے کہتی
اکبرؑ نہ ملِا نانا، میں مر جاؤں گی تنہا

رونے نہیں دیتےمجھے، راتوں کو مسلماں
بیماری سے بے حال ہوں، کچھ روز کی مہماں
ہر سمت سے ہے مجھ کو، اب موت نے گھیرا

بہنوں کا تو بھائیوں سے، رشتہ ہی عجب ہے
تم بھول گئے مجھ کو، یہ کیسا غضب ہے
اِس آس پہ زندہ ہوں، دیکھوں تیرا سہرا

وعدہ جو کیا بہن کو، سینے سے لگا کے
میں شادی کروں گا تو، تیرے پاس ہی آکے
میں سات محرم کو، لوٹوں گا نہ گھبرا

قاصد کو دیا خط میں، یہ پیغام لِکھا کے
اِک بار تو مل جا مجھے، سینے سے لگا کے
پتھرائی ہوئی نظریں، کب دیکھیں گی چہرہ

ویران گھروں میں نہ، اِسے نیند ہے آتی
اکبرؑ کی جدائی ہے، اِسے خون رلاتی
قدموں کے نشاں ڈھانپ کے، بیٹھی ہے سرِ راہ

گِن گِن کے تو صغراؑ نے، یہ دن ہیں گزارے
زندہ ہے تو اکبرؑ کے، وعدوں کے سہارے
دن رات تڑپتی ہے، اِسے اور نہ تڑپا

صغراؑ کے نصیبوں میں، تو رونا ہی لکھا ہے
سردار معصومہؑ کو، ملی کیسی سزا ہے
ؑخط آیا نہ اکبرؑ کا، روتی رہی صغرا

Aey chand muharram ke tu badli may chala ja
Tujhay dekh kay mar jaaye na beemar hay Sughra

1) Ghar Zehra ka lutnai ki khabar tu nay sunai
Tujhay dekh kay roti hay Muharram main khudai
Choda so baras beetay (x2) sab kertay hain shikwa

2) Milnay kay liye bhai ko baichain bari hay
Kab say Ali Akber ki yeh rahoon main khari hay
Bichiri hay yeh muddat say (x2) issay tu na nazar aa

3) Veeran gharaon main na issay neend hay aati
Akber ki judai hay issay khoon rulati
Qadmon kay nishan dhamp kay (x2) baithi hay sar-e-Rah

4) Gin gin kay to Sughra nay yeh din hain guzaray
Zinda hay to Akbar kay wadon kay saharay
Din rat tarapti hay (x2) issay aur na tarpa

5) Bhayya ki judai main paraishaan hay rehti
Har roz yeh nana ko ro ro kay hay kehti
Akbar na mila nana (x2) may mar jaun gi tanha

6) Ronay nahi daitay mujhay raton ko musalman
Beemari say bay haal hun kuch roz ki mehmaan
Har simt say hay mujh ko (x2) ab mout na gehra