Pyaray nabi ki pyari nawasi
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

صبر کی ملکہ زہرا کی پیاری
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

دیکھ رہی ہے کوئی تو آۓ
شانہ پکڑ کر کاش بٹھاۓ
نہ ہے سواری نہ ہے عماری
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

بھائی بھتیجے بھانجے بیٹے
ساتھ وطن سے آئی تھی لے کے
ہاۓ مقدر آج اکیلی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

بیٹوں کو صدقہ بھائی پہ کرکے
جس نے کیے تھے شکر کے سجدے
چھوڑ کے تنہا لاش کو اس کی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

جس کی کنیزیں نکلیں نہ باہر
بلوے میں لاۓ اس کو ستمگر
ہاۓ یہ غربت بنت علیؑ کی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

کتنے ہی قیدی جس نے چھڑاۓ
آج وہ بی بی سر کو جھکاۓ
ایک ردا کی بن کے سوالی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

سوچو وہ منظر سرور و ریحان
بھائ ہو جس کا وارث قرآن
کیسے وہ بی بی اشک بہاتی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

پیارے نبی کی پیاری نواسی
شام کو قیدی بن کے چلی ہے

شام کو قیدی بن کے چلی ہے