Paikaan baras rahay hain taboot par Hasan kay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



پیکاں برس رہے ہیں تابوت پر حسنؑ کے
امت مٹا رہی ہے آثار پنجتنؑ کے

بابا کے دل کے ٹکڑے تو نے گنے بہتر
آنسو اخی کے دیکھو نوحے سنو بہن کے

تابوت سے لپٹ کر قاسمؑ پکارے بابا
نوحے اخی کے دیکھو دکھڑے سنو بہن کے

زینبؑ پکاری بھائی دل ڈوبتا ہے میرا
پوچھو نہ شام کی جب یہ حال ہے وطن کے

زینبؑ ہے بال کھولے امت ہے تیر تولے
پوچھو نہ شام کی جب یہ حال ہے وطن کے

تن پر تو ہے حسنؑ کے گو چھد گیا سارا
محتاج ہی رہیں گے شبرؑ تو کفن کے

آخر کی ہچکیوں میں شبرؑنے روکے چومے
شبیرؑ کا گلااور بازو بڑی بہن کے