Aaj bhi Zainab ki aati hai sada bhai Hussain
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



آج بھی زینبؑ کی آتی ہے صدا بھائی حسینؑ
تیرا چہرہ تیری آنکھیں بھول نہ پائی حسینؑ

چلتے ناقے سے گرایا خود کو جلتی ریت پر
گھٹنیوں کے بل میں تیری لاش تک آئی حسینؑ

بس میں گھبرائ تھی خنجر تجھ پہ چلتا دیکھ کر
پھر کسی مشکل میں گھر کر میں نہ گھبرائی حسینؑ

کون تھا جو مرنے والوں میں نہیں تھا خوبرو
بھولنے بیٹھی تو کس کس کی نہ یاد آئی حسینؑ

ایک اک حجرے میں رک کر ٹھر کر ہر در کے پاس
خالی گھر میں ڈھونڈتی ہے تجھ کو تنہائی حسینؑ

دیکھتی ہوں خاک مقتل کی تو بھر آتا ہے دل
خاک پر میں کیسے کیسے پھول چھوڑ آئی حسینؑ

دور افتادہ سفر سے لوٹ کر میں نے نوید
ٹھنڈا پانی جب پیا بس تیری یاد آئی حسینؑ

آج بھی زینبؑ کی آتی ہے صدا بھائی حسینؑ

Aaj bhi Zainab ki aati hai sada bhai Hussain

Tera chehra, teri ankhain, bhol kab payi Hussain
 
1) Chaltay noukay say giraya khud ko jalti rait paar (x2)
   Ghutnion kay bal may teri laash tak aayi Hussain
 
2) Bus may ghabrayi thi khanjar tujh pay chalta dekh kar (x2)
   Phir kisi mushkil may ghir kaar main na ghabrayi Hussain
 
3) Kaun ta jo maarnay walon may nahi ta khubaroo (x2)
   Bhoolnay bethi to kis kis ki na yaad ay Hussain
 
4) Bhay rahay thay aankh say aanso teri rukhsat kay waqt (x2)
   Phir koyi anso na tapka aankh pathraye Hussain
 
5) Hath may kozay liye sasb aasman taktay rehay (x2)
   Abar nay ik bond paani ki na barsayi Hussain
 
6) Door uftada safar say lout kar may nay Naveed
   Thanda paani jab piya bas teri yaad ai Hussain (x2)