Haey masjid may qatal Ghazi ka baba ho gaya
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



ہاے مسجد میں قتل غازیؑ کا بابا ہو گیا
فاطمہؑ کی بیٹیوں پہ ظلم کیسا ہو گیا

جوش میں آکرفرشتوں سے لگا کہنے خدا
سر کھلا ہے فاطمہؑ کا رو رہے ہیں مصطفیؐ
حشر سے پہلے یہ کیسا حشر برپا ہوگیا

آگئیں پردیس میں سادات پہ بربادیاں
لٹ گئی ہیں کوفہ میں کونین کی شہزادیاں
کٹ گے سجدے میں حیدرؑ دین زندہ ہو گیا

دیکھ کر بابا کو زخمی رو رہی ہیں بیٹیاں
عرش پہ سارے فرشتے لے رہے ہیں سسکیاں
آسماں ہلنے لگا نبیوں پہ سکتہ ہو گیا

ہیں ابھی شبیرؑ و شبرؑ اور علمدارؑ بھی
گھر ہے تیرے بابا کا کب شام کا بازار ہے
ثانیء زہرا تمہارا سر کیوں ننگا ہوگا

رکھ لیا جھولی میں سر آپکا شبیرؑ نے
دیکھ کر بابا کو زخمی یہ کہا دلگیر نے
ہائے کوفے میں یہ منظر کربلا کا ہو گیا

Haey masjid may qatal Ghazi ka baba ho gaya

Fatima ki betiyon pay (x2) zulm kaisa ho gaya
  
1) Josh main aakar farishto say laga kehnay khuda
   Saar khula hai Fatima ka ro rahay hai Mustafa
   Hashar say pehlay yeh kaisa (x2) hashar barpa ho gaya
  
2) Aagayee pardes main saadaat pay barbaadiyaan
   Lut gayee hai koofa main konain ki shahzaadiyaan
   Kat gayey sajday main Haider (x2) deen zinda ho gaya
  
3) Dekh kar baba ko zakhmi ro rahee hain baytiyaan
   Arsh pay saaray faarishtay lay rahay hain siskiyaan
   Aasmaan hilnay laga (x2) nabiyon pay sakta ho gaya
  
4) Hai abhee Shabbir-o-Shabbar aur alambardaar hai
   Ghar hai teray baba ka, kab Shaam ka bazaar hai
   Saniyey Zehra tumhaara (x2) sir kyun uryan ho gaya
  
5) Rakh lia jhooli main sir aapka Shabbir nay
   Dekh kar baba ko zakhmi yeh kaha dilgeer nay
   Haey koofa main yeh manzar (x2) Karbala ka ho gaya