Zehra ne qayamat ka samaa dekh lia hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

زہراؑ نے قیامت کا سماں دیکھ لیا ہے
آلام کا اِک کوہِ گراں دیکھ لیا ہے

حیدرؑ کی عداوت میں بُجھا ظُلم کا خنجر
ہوتا نبی زادیؑ پہ رواں دیکھ لیا ہے

جلتا ہوا دَر ، اُٹھتی فغاں ، پہلو شِکستہ
حسنینؑ نے غربت کا سماں دیکھ لیا ہے

مادر کے جنازے پہ وہ غَش کھا کے گری ہے
زینبؑ نے طمانچے کا نشاں دیکھ لیا ہے

زہراؑ نے جو دربار کے ماحول کو دیکھا
شبیرؑ سرِ نوکِ سِناں دیکھ لیا ہے

جھٹلائی جہاں فاطمہ زہراؑ کی گواہی
قرآں کو بھی جھٹلاتے وہاں دیکھ لیا ہے

زہراؑ کے مصائب پہ جگر ہوتا ہے چھلنی
حیدرؑ بھی رہے گریہ کُناں دیکھ لیا ہے

خوں ہو گیا کاغذ کا جِگر اُس نے بھی شاید
رضوانؔ کا دلسَوز بیاں دیکھ لیا ہے