Asghar my teri maa hoon
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Aa jao chand meray, teri pyas may bujhaoon
Asghar may teri maa hoon
Meray ladlay kahan ho, seenay tumhe lagaon
Asghar may teri maa hoon

Teray jhoolay ko Sakina, ro ro ke choomti hay
Tujhe ghar may dhoondti hay
Teri moat ki khabar may, kaise usay sunaoon
Asghar may teri maa hoon

Beta tumhara qatil, meray samnay kharra hay
Janay kyun hans raha hay
Chadar bhi lut gayi hay, muh kis tarha chupaoon
Asghar may teri maa hoon

Lagta hay maa se Asghar, naraz ho gaya hay
Maqtal may soo gaya hay
Dhoondo kahan may us ko, aur kis tarha jagaoon
Asghar may teri maa hoon

Maidan my ja jurrat, bhi aisi tum dikhna
Ghazi hi nazar aana
Tu payas may hay par may, pani kidhar se laoon
Asghar may teri maa hoon

آ جاؤ چاند میرے ، تیری پیاس میں بجھاؤں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں
میرے لاڈلے کہاں ہو ، سینے تمہیں لگاؤں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں

تیرے جھولے کو سكینہؑ ، رو رو كے چومتی ہے
تجھے گھر میں ڈھونڈتی ہے
تیری موت کی خبر میں ، کیسے اُسے سناؤں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں

بیٹا تمہارا قاتل ، میرے سامنے کھڑا ہے
جانے کیوں ہنس رہا ہے
چادر بھی لٹ گئی ہے ، منہ کس طرِحِ چھپائوں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں

لگتا ہے ماں سے اصغرؑ ، ناراض ہو گیا ہے
مقتل میں سو گیا ہے
ڈھونڈوں کہاں میں اس کو ، اور کس طرح جگاؤں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں

میداں میں جا کے جرات ، بھی ایسی تم دکھانا
غازیؑ ہی نظر آنا
تو پیاس میں ہے پر میں ، پانی کدھر سے لاؤں
اصغرؑ میں تیری ماں ہوں