Ya Fatima pursa lo Moosa bine Jafar ka
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

یا فاطمہؑ پُرسہ لو ، موسیٰ بنِ جعفرؑ کا 
غربت میں جسے ہائے ، بے جرم و خطا مارا 

بے رحم لعینوں نے ، یوں زہر دیا کاری 
ہے سانس کا لینا بھی ، مولاؑ پہ میرے بھاری 
اور جاری بدن سے ہے ، خوں بن كے جگر سارا 
یا فاطمہؑ پُرسہ لو موسیٰ بنِ جعفرؑ کا 

سجادؑ کی طرح سے ، زنجیر میں ہیں جکڑے 
اور ٹکڑے کلیجہ بھی ، شبرؑ کی طرح سے ہے 
شبیرؑ کی غربت کا ، اِظہار ہے دوبارہ 
یا فاطمہؑ پُرسہ لو ، موسیٰ بنِ جعفرؑ کا

یاں موسیٰءِ كاظمؑ جو ، خون منه سے اکلتے ہیں 
شبیرؑ اُدھر اپنی ، تربت سے نکلتے ہیں 
پُرسے كے لئے آئے ، یثرب سے تیرے بابا 
یا فاطمہؑ پُرسہ لو ، موسیٰ بنِ جعفرؑ کا

پھیری ہیں نگاہیں جو ، زہراؑ تیرے بچوں سے 
بغداد كے کلمہ گو ، کاندھا بھی نہیں دیتے 
مزدور اُٹھاتے ہیں ، لاشہ میرے مولاؑ کا 
یا فاطمہؑ پُرسہ لو ، موسیٰ بنِ جعفرؑ کا