Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki
Haey gham may teray jati rahi beenayi Ali ki

Darbar may zalim ke gayi bint e Payambar
Kiya waqt tha kuch kar na saka fatah e Khaibar
Haey hanstay rahay ghurbat pe tamshayi Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

Paigham e wilayat ki liye ghar ghar gayi Zehra
Shohar ke liye dhaal thi jab tak rahi Zehra
Haey dunya ko batati rahi sachayi Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

Kehtay thay Ali Zehra se kiya haal hay bibi
Ab ham to salam aa ke bhi karta nahi koyi
Haey hay baad e Nabi kaisi pazeerai Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

Dar jalta hua Fatima Zehra pe giraya
Mohsin ki shahadat ka sabab ban gayi dunya
Haey tasveer mukammal nahi ho payi Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

Bahar kabhi hujray may kabhi khak e Nabi par
Har raat ki tareeki may aulad se chup kar
Haey nikli hay tujhay dhoondnay beenayi Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

Zehra ki judai ko lagaye huay dil se
Pachees baras Mola ne chup chap guzaray
Haey ik hujray may dunya simat aayi Ali ki
Teri tanhai hay tanhai Ali ki 
Haey Zehra teri tanhai hay tanhai Ali ki

ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے غم میں تیرے جاتی رہی ، بینائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی

دربار میں ظالم كے گئی بنت پیمبرؐ 
کیا وقت تھا کچھ کر نہ سکا فاتح خیبر 
ہائے ہنستے رہے غربت پہ ، تماشائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 

پیغامِ ولایت لئے گھر گھر گئی زہراؑ 
شوہر كے لیے ڈھال تھی جب تک رہی زندہ
ہائے دنیا کو بتاتی رہی ، سچائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 

کہتے تھے علیؑ زہراؑ سے کیا حال ہے بی بی 
اب ہَم کو سلام آ كے بھی کرتا نہیں کوئی 
ہائے ہے بعدِ نبی کیسی ، پذیرائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 

دَر جلتا ہوا فاطمہ زہراؑ پہ گرایا 
محسنؑ کی شہادت کا سبب بن گئی دنیا 
ہائے تصویر مکمل نہیں ، ہو پائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 

باہر کبھی ہجرے میں کبھی خاکِ نبی پر 
ہر رات کی تاریکی میں اولاد سے چُپ کر 
ہائے نکلی ہے تجھے ڈھونڈنے ، بینائی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 

زہراؑ کی جدائی کو لگائے ہوئے دِل سے 
پچیس برس مولاؑ نے چُپ چاپ گزارے 
ہائے اِک ہجرے میں کُل دنیا ، سمٹ آئی علیؑ کی 
تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی 
ہائے زہراؑ تیری تنہائی ہے تنہائی علیؑ کی