Bhula sakay gi na duniya teri wafa Ghazi
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

ؑبھُلا سکے گی نہ دنیا تیری وفا غازی
ؑہیں دونوں بازو تیرے دین کی بقا غازی
ؑبھُلا سکے گی نہ دنیا تیری وفا غازی

چہارسمت تھی یلغار اہلِ باطل کی
علم نہ جھُکنے دیااور نہ خود جھُکا غازی
بھُلا سکے گی نہ ۔۔۔۔۔

نبھائی اس طرح شبیر سے وفا توں نے
وفا کو کہنا پڑا توں ہے با وفا غازی
بھُلا سکے گی نہ ۔۔۔۔۔  

تاریخ آج بھی جھُٹلا اسے نہیں سکتی
تیرے ہی خون کا صدقہ ہے لا اِلٰہ غازی
بھُلا سکے گی نہ ۔۔۔۔۔

کہا سکینہ نے بابا نہ پانی مانگوں گی
بلا لو خیموں میں جلد ی میرا چچا غازی
بھُلا سکے گی نہ ۔۔۔۔۔

پُکارے جائیں گے مشتاق حشر میں پیہم
درِ بتول کے سگ ہیں تیرے گدا غازی
بھُلا سکے گی نہ ۔۔۔۔۔

ہیں دونوں بازو تیرے دین کی بقا غازی
بھُلا سکے گی نہ 

Bhula sakay gi na duniya teri wafa Ghazy
Hain dono baazu terai dheen ki baqa Ghazy
 
1) Chahar simt thi yalgaar ahlai baatil ki
   Alam na jhuk nai diya aur na khud jhuka Ghazy
 
2) Nhibayi is tarah Shabbir sai wafa tu nai
   Wafa ko kehna parah tu hai bawafa Ghazy
 
3) Tarikh aaj bhi jhutla issai nahi saktai
   Terai hi khoon ka sadqa hai la Ila Ghazy
 
4) Kaha Sakina nai baba na paani maangu�n gi
   Bula lo khaimon main jaldi mera chacha Ghazy