Abbas aajao bhai akela hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



آخری سلام آخری سلام
مقتل میں پہونچے جب شاہِ والا
لاشے جواں اور خیموں کو دیکھا
دریا کو دیکھا پھر یہ پکارا
اب یہ سلام آخر ہے میرا
عباسؑ آجاؤ بھائی اکیلا ہے

تنہا مسافر کو لاکھوں نے گھیرا ہے
عباسؑ آجاؤ بھائی اکیلا ہے

تم نے نہ دیکھی غربت ہماری
زینبؑ تھی لائی میری سواری
رخصت کا میری منظر عجب تھا
سینے سے لگ جاؤ بھائی اکیلا ہے

جب سے ہو بچھڑے عباسؑ ہم سے
اہل حرم ہیں لپٹے علم سے
کیسے جئیے گی بالی سکینہؑ
کیا ہوگا بتلاؤ بھائی اکیلا ہے

لشکر کہاں کا جب تم نہیں ہو
اعداء تو خوش ہیں اب تم نہیں ہو
کتنا اکیلا کتنا ہوں تنہا
سینے میں ہے گھاؤ بھائی اکیلا ہے

دن بھر اٹھاۓ کتنے جنازے
اب کون ہے جو دے گا دلاسے
ہوتے اگر تم دیتے دلاسہ
آؤ چلے آؤ بھائی اکیلا ہے

مجھ پر برستے یہ سنگ دیکھو
بیکس کی تنہا ہی جنگ دیکھو
دیکھو نہ ٹوٹے نانا سے وعدہ
ہمت بڑھا جاؤ بھائی اکیلا ہے

جب شمر خنجر کو پھیرتا تھا
قاتل نے شہہ سے جب یہ سنا تھا
پیاسا گلا اس دم یہ پکارا
صورت دکھا جاؤ بھائی اکیلا ہے

سر شہہ کا آیا نوک سناں پر
آئ صدا یہ ریحان و سرور
بے سر پڑا ہے بھائی کا لاشہ
اب تو چلے آؤ بھائی اکیلا ہے

(Maqtal main ponchay jab shah-e-wala
Lashay jawan aur khaimon ko dekha
Dariya ko dekha phir yeh pukara
Ab yeh salamay aakhir hay mera.)

Abbas aajao bhai akela hay
Tanha musafir ko lakhon nay ghera hay

1) Tum nay nah dekhi ghurbat humari
Zainab ti laaye meri sawari
Rukhsat ka meri manzar ajab tha
Seenay say lag jawo
Bhai akela hay

2) Jab say ho bichray Abbas hum say
Ahle haram hai liptay alaam say
Kaisay jeeagi baali Sakina
Kya hoga batlawo
Bhai akela hay

3) Lashkar kahan ka jab tum nahin ho
Dada toh khush hay abh tum nahin ho
Kitna akela kitna hun tanha
Seenay main hai ghawo
Bhai akela hay

4) Din bhaar uthaye Kitnay janazay
Ab Kaun hai jo dayga dilasay
Hotau agaar tym dayte dilasa
Aao chalay aao
Bhai akela hay

5) Mujh paar barastay ye sang dekho
Baykas ki tanha ki jang dekho
Dekho nah tootay Nana say waada
Himat barha jaawo
Bhai akela hay

6) Jab Shimaar khanjaar ko phearta tah
Qatil nay Shah say khud ye suna tah
Pyasa gala us dum ye pukara
Soorat dikha jaawo
Bhai akela hay

7) Saar Shah ka aaya nokay sina paar
Aayi sada ye Rehan o Sarwar
Bay saar para hai bhai ka lasha
Ab toh chalay aawo
Bahi akela hay