Baat aaye gi parday ki to yaad aaye gi Zainab
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

بات آئے گی پردے کی تو یاد آئے گی زینبؑ
تاریخ غم و درد کو دہرائے گئی زینبؑ

اٹھتی جو نہیں لاش جواں دیجئے آواز
پالا ہے تو لاشہ بھی اٹھا لائے گی زینبؑ
بات آئے گی

کِس کِس کو سنبھالے گی کِسے دے گی تسلی
جلتے ہوئے خیموں سے کِسے لائے گی زینبؑ
بات آئے گی

سر ننگے جسے دیکھو کے سورج بھی نہ نکلا
اب سر کھلے بلوے میں وہی جائے گی زینبؑ
بات آئے گی

مچلے گی جو سونے کے لئے رات کو بچی
کیا دے کے تسلی اسے بہلائے گی زینبؑ
بات آئے گی

چادر ہی کا دے دیتی کفن چھین لی وہ بھی
اب بھائی کو کس طرح سے دفنائے گی زینبؑ
بات آئے گی

پرسے کو انیس آئیں گے اور پوچھیں گے احوال
کس کس کو نشاں دروں کے دکھلائے گی زینبؑ