Haey Zainab(sa)
Efforts: Zehra Ali

بسم اللہ الرحمن الرحیم
شاہد بلتستانی۔۔۔۔۔۔نوحہ۲۰۱۴۔۔۲۰۱۵۔۔۔۔بی بی زینبؑ  
 ہاۓ زینبؑ 
ہاۓ ہاۓ زینبؑ          ہاۓ ہاۓ شام
ہاۓ ہاۓ زینب          ہاۓ ہاۓ شام
     ہاۓ زینب کو زمانے نے کھلے سر دیکھا
                                      جس کو غازیؑ نے بھی نظریں نہ اٹھا کر دیکھا
۱۔ کم نہ تھی شمر کے خنجر سے نظر لوگوں کی
                                        شہؑ نے نیزے سے بہن کو تہہِ خنجر دیکھا
۲۔ ہاتھ آنکھوں پہ سکینہ کے رکھے بھایٔ نے
                                        پانی پیتا ہوا جب شام کا لشکر دیکھا 
۳۔ تیر کا زخم کہاں یاد رہا اصغر کو 
                                      ماں کو جب شام میں کھاتے ہوۓ پتھر دیکھا
۴۔ ہاتھ خالی نہ تھے بازار میں آنے والے 
                                    کہیں صدقے کی کھجوریں کہیں پتھر دیکھا
۵۔ تشت میں باپ کا سر اور لبوں پر تھی چَھری
                                   ایک معصوم سی بچی نے یہ منظر دیکھا
۶۔ جس نے مانگا نہ کفن باپ کی میت کے لیے 
                                 اس کو زینب کے لیے مانگتے چادر دیکھا
۷۔ پھر تکلم نہ علمدار نے کھولی آنکھیں
                                بنتِ زہرا کی جو چادر کو سِنا پر دیکھا
                              ہاۓ زینب کو زمانے نے کھلے سر دیکھا
*************************************