Sughra teray baghair safar mera adhoora ho ga
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

صغریٰؑ تیرے بغیر سفر میرا ادھورا ہو گا
ویران گھر میں کیسے ، اب تیرا گزارا ہو گا

بیمار بہن ہو تو چھوڑا نہیں جاتا
سب لوگ جا رہے ہیں ، کیا میرا سہارا ہو گا

گر کربلا میں تجھ کو میں نہ بلا سکا
شادی کا خواب واللہ ، اکبرؑ کا نہ پُورا ہو گا

کئی بار بی بی صغریٰؑ مہمل پہ چڑھی ہو گی
کئی بار روتے روتے، اکبرؑ نے اتارا ہو گا

ناشاد بارہ چودہ معصوم نے کہا
جنت میں رونے والو ، گھر آدھا تمہارا ہو گا

Sughra teray baghair safar mera adhoora ho ga
Veeran ghar may kaise, ab tera guzara ho ga

Beemar behan ho to chora nahi jata
Sab log ja rahay hain, Kia mera sahara ho ga

Gar Karbala may tujh ko may na bula saka
Shadi ka khab wallah, Akbar ka na poora ho ga

Kayi bar bibi Sughra mehmal pe charhi ho gi
Kayi bar rotay rotay, Akbar ne utara ho ga

Nashad baara chowda Masoom ne kaha
Jannat may ronay walo, ghar aadha tumhara ho ga