Khadeeja (s.a) ki Mayyat
Efforts: Syed Razi

Madine me aayi ye kaisi qayamath, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyat,
Hai mehzoon shaahe madeena ki haalath, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Nikalte hain rote hue sab gharon se, ke jaise utha maa ka saaya saron se,
Yunmasroof gham hai Mohammed ki ummat nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Hai Maa aur beti me ab toh judayi, Nabi kaise beti ko den ab tasalli,
Ke tuta hai Zehra pa koh e musibath, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Koi Maa ke marne ka gham kya bataye, Yateemi ka sadma yateema hi jaane,
Sahe Fatima kaise maadar ki furqat, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Ye tanhayi aur ye yateemi ka sadma, bina Maa ke dushwar hota hai jeena,
Mile kaise binte Khadeeja ko rahat, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Nadi aankh se aansuon ki rawan hai, Zaban par faqat haye Maa haye Maa hai,
Kahan Fatima ko hai rone ki fursat, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

Mujeeb aaj har ummati ro raha hai, Razi shehr e yasrab me matam bapa hai,
Ke Zehra ki Maa kar gayin aaj rehlath, nikalti hai ghar se Khadeeja ki mayyath..

مدینے میں آئی یہ کیسی قیامت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میّت
ہے محزون شاہؑ مدینہ کی حالت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میّت

نکلتے ہیں روتے ہوئے سب گھروں سے کہ جیسے اٹھا ماں کا سایا سروں سے
یوں مصروف غم ہے محمدؑ کی امّت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میّت

ہے ماں اور بیٹی میں اب تو جدائی نبیؑ کیسے بیٹی کو دیں اب تصلی
کہ ٹوٹا ہے زہراؑ پہ کوہ مصیبت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میت

کوئی ماں کے مرنے کا غم کیا بتاۓ یتیمی کا صدمہ یتیمہ ہی جانے
سہے فاطمہؑ کیسے مادر کی فرقت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میت

یہ تنہائی اور یہ یتیمی کا صدمہ بنا ماں کے دشوار ہوتا ہے جینا
ملے کیسے بنت خدیجہؑ کو راحت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میت

ندی آنکھ سے آنسوں کی رواں ہے زباں پر فقط ہاے ماں ہاے ماں ہے
کہاں فاطمہؑ کو ہے رونے کی فرصت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میت

مجیب آج ہر امتی رورہا ہے رضی شہر یسرب میں ماتم بپا ہے
کے زہراؑ کی ماں کرگیں آج رحلت نکلتی ہے گھر سے خدیجہؑ کی میت