Berriyan hain Abid-e-beemar hain
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



بیڑیاں ہیں عابدِؑ بیمار ہیں
بے کسوں کے قافلہ سالار ہیں

ماؤں نے گھٹی میں دی حبِّ علیؑ
وارثانِ بوذر و عمّار ہیں

ہے دلوں میں نصب غازیؑ کا علم
ہم وفاؤں کے علمبردار ہیں

اپنی کشتی ڈوب سکتی ہی نہیں
یا علیؑ کہتے ہی دریا پار ہیں

کب شفا کی ہے ہمیں کوئی طلب
ماتمِ سجادؑ میں بیمار ہیں

فاطمہؑ کے گھر سے ہے نان و نمک
فاطمہؑ کے گھر کے ماتم دار ہیں

ہائے وہ غربت وہ عاشورے کی شب
بنتِ زہراؑ گھر کی پہرے دار ہیں

بے بسی لاوارثی اہلِ حرم
ننگِ سر قیدی سرِ دربار ہیں