Hur alaihis salam
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Sar e Hur par roomal e Zehra 
Jis din se bandha dunya ne kaha
Khud Karb o bala ne di ye sada
Ab hashr talak ye kehlaye ga
Hur alaihis salam

Kia waqt mila aey Hur tujh ko
Sab ahle qalam majboor huay
Jab naam tera kaghaz pe likha
Teray naam ke aagay likhna parra
Hur alaihis salam

Zainab ne kaha jab bhai tujhe
Aur tujh ko chacha Akbar ne kaha
Yani ke shahdat se pehlay
Tujh se ye laqab mansoob hua
Hur alaihis salam

Roomal saja ke Zehra ka
Jab khuld may tu pohoncha ho ga
Jannat may kia ho ga sab ne 
Ye keh kar istaqbal tera
Hur alaihis salam

Shabbir ke lashkar may jo parrhi
Hur tu ne namaz e subha dahum
Tasbeeh ke danoo se aayi
Hur teray liye bas aik sada
Hur alaihis salam

Maqtal se tera lasha le kar
Khoon rotay huay aaye Maula
Yun rooyi tujhe bint e Zehra
Khud maut ko ban may kehna parra
Hur alaihis salam

Lashay pe haram thay noha kunaa
Har simt sada thi wa waila
Nohon may magar shamil thi sada
Baatil ko hara kar jeet gaya
Hur alaihis salam

Ihsan shanasi ne Mazhar 
Kirdar banaya hay Hur ka
Jab haq ka usay Irfan hua
Har aik muarrikh ne ye likha
Hur alaihis salam

سَر حرؑ پر رومال زہراؑ 
جس دن سے بندھا دنیا نے کہا 
خود کرب و بلا نے دی یہ صدا 
اب حشر تلک یہ کہلائے گا 
حرؑ علیہ السلام 

کیا بخت ملا اے حرؑ تجھ کو 
سب اہل قلم مجبور ہوئے 
جب نام تیرا کاغذ پہ لکھا 
تیرے نام كے آگے لکھنا پڑا 
حرؑ علیہ السلام 

زینبؑ نے کہا جب بھائی تجھے 
اور تجھ کو چچا اکبرؑ نے کہا 
یعنی كہ شہادت سے پہلے 
تجھ سے یہ لقب منسوب ہوا 
حرؑ علیہ السلام 

رومال سجا كے زہراؑ کا 
جب خلد میں تو پہنچا ہو گا 
جنت میں کیا ہو گا سب نے 
یہ کہہ کر استقبال تیرا 
حرؑ علیہ السلام 

شبیر كے لشکر میں جو پڑھی 
حرؑ تو نے نمازِ صبح دھم 
تسبیح كے دانوں سے آئی 
حرؑ تیرے لیے بس ایک صدا 
حرؑ علیہ السلام 

مقتل سے تیرا لاشہ لے کر 
خون روتے ہوئے آئے مولاؑ
یوں روئی تجھے بنتِ زہراؑ
خود موت کو بن میں کہنا پڑا 
حرؑ علیہ السلام 

لاشے پہ حرم تھے نوحہ کونا 
ہر سمت صدا تھی وا ویلا 
نوحون میں مگر شامل تھی صدا 
باطل کو ہرا کر جیت گیا 
حرؑ علیہ السلام 

اِحْسان شناسی نے مظہر 
کردار بنایا ہے حرؑ کا 
جب حق کا اسے عرفان ہوا 
ہر ایک مورخ نے یہ لکھا 
حرؑ علیہ السلام