Baghdad ke ik pul pe kharra soch raha hoon
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

بغداد كے اک پل پہ کھڑا سوچ رہا ہوں
معصوم قبیلے کی خطا سوچ رہا ہوں

کبھی خنجر ، کبھی تلوار ، کبھی زہر کی صورت
سادات کو کیا اجر ملا سوچ رہا ہوں

ہے پل پہ رسن بستا پڑا لاشہءِ كاظمؑ
اسلام سکھانے کا صلہ سوچ رہا ہوں

سوچو تو وہ تھی لاشہءِ كاظمؑ کے لیے بھی
گونجی جو تھی ھل من کی صدا سوچ رہا ہوں

لعنت ہے بہت چھوٹی ثقیفے کے لیے تو
میں لفظ کوئی اِس سے بڑا سوچ رہا ہوں

Baghdad ke ik pul pe kharra soch raha hoon,
Masoom qabilay ki khata soch raha hoon,

kabhi khanjar, kabhi talwar, kabhi zehr ki surat,
SAADAAT(as) ko kia ajar mila soch raha hoon.

Hay Pul Pe rasan basta para Lasha-e-KAZIM
Islam sikhany ka sila soch raha hoon,

Socho to wo thi Lasha-e-KAZIM k liye bhi
Goonji jo thi HAL MIN ki sada soch raha hoon

Lanat hay bohat choti Saqeefay k liye to
Me lafz koi is se bara soch raha hoon