Mola utho ke masjid e Koofa udas hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Mola utho ke masjid e Koofa udas hay
Kaisa Yeh Din hai Aaj Ke Duniya Udaas Hai

Hasanian Beqarar Hai Zainab Hai Muztarib
Rooh-e-Janab-e-Fatema Zehra Udaas Hai

Mohataj-o-benava-o-Yateemo Ke Dardras
Dekho Ke Har Yateem ka Chehra Udaas Hai

Muskhil kusha ameer e arab bhi shuaaein thi
Tum kya udas ho ke zamana udaas hai

Kisko pukare kaise umeedein shifa karein
Beemar benawa e maseeha udaas hai

Matam ke hain libaz me Allah ka haram
Gham me tumhare Khan-e-Kaaba udaas hai

Lillah Karbala Ka Tasavvur Na Ki Jiye
Dariya-e-Alqama Ka Nazara Udaas Hai

Aayi Hai Sehar Khun Ki Surkhi Liye Huve
Qaak Ud Rahi hai Khan-e-Kaaba Udaas Hai

Jibreel Ko Fughaan Hai Ali Qatl Ho gaye
Larzaan Zameen Hai Arsh-e-Moula Udaas Hai

Bekal Hai Kainat Hawaen Hai Muntashir
Larzaan Zameen Jangal-o-Sehra Udaas Hai

Har Simth Chha Gaye Hai Qamar Yeh Udaasiyaan
Toota Hai Baab-e-ilm Madina Udaas Hai

مولاؑ اٹھو كے مسجد کوفہ اداس ہے 
کیسا یہ دن ہے آج كے دُنیا اداس ہے 

حسنینؑ بے قرار ہیں زینبؑ ہے مضطرب 
روحِ جنابِ فاطمہ زہراؑ اداس ہے 

محتاج و بے نوا و یتیموں کے دادرس 
دیکھو كے ہر یتیم کا چہرہ اداس ہے 

مشکل كشاء امیرِ عرب بھی شعائیں تھیں
تم کیا اُداس ہو كہ زمانہ اداس ہے 

کس کو پکارے کیسے اُمیدِ شفاء کریں 
بیمار بےنوائے مسیحا اداس ہے 

ماتم كے ہیں لباس میں اللہ کا حرام 
غم میں تمھارے خانہءِ کعبہ اداس ہے 

للہ کربلا کا تصور نہ کیجئے 
دریا ہے علقمہ کا نظارہ اداس ہے 

آئی ہے سحر خون کی سرخی لیے ہوے 
خاک اُڑ رہی ہے خانہءِ کعبہ اداس ہے 

جبریل کی فغان ہے علیؑ قتل ہو گئے 
لرزاں زمین ہے عرش معلیٰ اداس ہے 

بے کل ہے کائنات ہوائیں ہیں منتشر 
لرزاں زمین جنگل و صحرا اداس ہے 

ہر سمت چھا گئیں ہیں قمر یہ اُداسیاں 
ٹوٹا ہے بابِ علم مدینہ اداس ہے