Kartay thay Sarwar buka haey kamar jhuk gayi
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

مر گئے ہم جیتے جی ، چھٹ گئے ہم سے اخی 
ہوگئے بازو جدا ، ہائے کمر جھک گئی
کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

قوتِ بازو تھا وہ ، قلب کی طاقت تھا وہ 
ہوگئی ہم بے نوا ، ہائے کمر جھک گئی
کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

لے چلو اکبرؑ وہاں ، بھائی ہے میرا جہاں 
جلد چلو مہ لقا ، ہائے کمر جھک گئی
کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

در پہ کھڑی بے قرار ، کرتی ہے وہ انتظار 
اسے کہونگا میں کیا ، ہائے کمر جھک گئی
کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

پیاس سے سب ہیں نڈھال ، پانی کا ہو گا سوال 
کہنا وہ سب بہہ گیا ، ہائے کمر جھک گئی
کرتے تھے سرورؑ بکا ، ہائے کمر جھک گئی
مر گیا بھائی میرا ہائے کمر جھک گئی

Karte Thay Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai (x2)
Mergaya Bhayi Mera Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergai Hum Jeteji, Chut Gai Hum Se Aki (x2)
Hogai Bazo Juda, Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergaya Bhayi Mera, Hai Kamar Jhukgai
Karte Te Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai

Kuwaate Bazo Tha Wo, Kalb Ki Takat Thaw Wo (x2)
Hogai Hum Be Nawa, Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergaya Bhayi Mera, Hai Kamar Jhukgai
Karte Te Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai

Le Chalo Akbar Waha, Bhai He Mera Jaha (x2)
Jald Chalo Mehlaka, Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergaya Bhayi Mera, Hai Kamar Jhukgai
Karte Te Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai

Dar Me Kari Beqarar, Kurte He Wo Intezar (x2) 
Usse Kahunga Me Kya, Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergaya Bhayi Mera, Hai Kamar Jhukgai
Karte Te Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai

Pyass Se Sub Hai Nidhaal, Pani Ka Hoga Sawaal (x2)
Kehna Wo Sab Behgaya, Hai Kamar Jhukgai (x2)

Mergaya Bhayi Mera, Hai Kamar Jhukgai (x2)
Karte Te Sarwar Buka, Hai Kamar Jhukgai (x2)