Begunah mara gaya sibte Rasool e dosara
Efforts: Mohammad Zaidi



بےگناہ مارا گیا رسول دوسرا وا حسن سبز قبا
کلمہ گویوں نے کیا خوب کیا وعدہ وفا
وا حسن سبز قبا

خوں اگلتے ہوئے بھائی کو بہن نے دیکھا
یوں تڑپ کر یہ کہا
تیری غربت پہ اے بھائی تیری زینبؑ ہو فدا

ماں کے غم سے ابھی آزاد کہاں تھی زینبؑ
ہو گیا کیسا غضب
بابا زندہ نہ رہا بھائی سوئے خلد چلا
وا حسنِؑ سبز قبا

گھر سے اِک بار جنازہ جو نکل جاتا ہے
بھر وہ کب آتا ہے
یہ وہ تابوت ہے جو لوٹ کے پھر گھر کوچلا
وا حسنِؑ سبز قبا

شہہؑ نے اُس وقت جو غازی کو نہ روکا ہوتا
حشر ہو جاتا بپا
چھوڑ آتے نہ جنازے کو اٹھا کر مولاؑ
وا حسنِؑ سبز قبا


بھائی کی لاش پہ رو رو کہہ یہ زینبؑ نے کہا
آرزو تھی بھیا ( )
کاش عبداللہؑ و قاسمؑ کو بناتے دولھا
وا حسنِؑ سبز قبا

ایک تو باغ فدک اور خلافت چھینی
اس پے کی بے دینی
پہلو میں نانا کے بھی دفن نہیں ہونے دیا
وا حسن سبز قبا

تیرے تابوت پہ کس واسطے مارے گئے تیر
آئے مسلمانوں کے پیر
کلمہ پڑھتے نہ تھے جد کا تیرے اہلِ جفا
وا حسن سبز قبا

خلد سے آئی سدا بیٹا حسنؑ جلدی آ
تاکہ دوں تجھ کو دکھا
تیر مارے تجھے چھلنی ہے کلیجہ میرا
وا حسن سبز قبا

وقت رحلت تیرے نانا نے وصیت کی تھی
اُس پہ تاکید یہ کی
اہلِ بیتؑ اور کلام اللہ بس میرے سوا
وا حسن سبز قبا

Begunah mara gaya sibte rasool e dosara wa Hassan e sabz e qaba

Kalma goyo nai kiya khoob kiya wada wafa
Wa Hassan e sabz e qaba (x2)

Bhai ki lash peh ro ro keh yeh Zainab nai kaha
Arzoo thi bhaiya (x2)
Kash Abudullah o Qasim ko banateh doolah
Wa Hassan e sabz qaba.

Aik toh bagh e fidaq or khilafaat cheeni
Uss pay ki bay deeni (x2)
Pehlu main nana keh bhi dafn nahin hone diya
Wa Hassan e sabz qaba

Tere taboot peh kis wasteh mare gaye teer
Aye musalamano keh peer (x2)
Kalma parhte na theh jud ka tere Ahle- Jafa
Wa Hassan e sabz e qaba

Khuld seh aaye sada baita Hassan jaldi aa
Takeh doon tujh ko dekha (x2)
Teer mare tujh chalnee hai kaleja mera
Wa Hassan e sabz qaba

Waqt e rehlat teray nana hai waseeat ki thi
Uspeh takeed e ye kee (x2)
Ahlebait aur e kalamul lah heh bas mere siwa
Wa Hassan e sabz qaba