Aey aaftab chup ja Zainab jo be rida hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



اے آفتاب چُھپ جا زینبؑ جو بے ردا ہے
زہراؑ کی لاڈلی کا بلوے میں سر کھلا ہے

لوگو حیا کرو تم ناموس مصطفیٰؐ کا
بازار شام کا ہے زینبؑ کا سر کھلا ہے

بچ جائے تیرا پردہ زینبؑ کسی طرح سے
نیزے پہ تیرا بھائی قرآں سنا رہا ہے

ہم ہیں درود والے سُن لو اے شام والو 
پوتا علیؑ ولیؑ کا سب کو بتا رہا ہے 

بہنوں کا سر کُھلا ہے شاید اِِسی وجہ سے
عباسِؑ با وفا کا سر نیزے سے گرا ہے

اے کلمہ گویو سوچو کچھ تو حیا کرو تم
جو زّین ہے علیؑ کی اُس کی چِِھنی ردا ہے