Jab yaad sakina as ko Teri ati hai baba
Efforts: agha Abbas alsyed



Jab yaad sakina a.s ko Teri ati hai baba
Sar zindha ki diwaron sey takrati hai baba
Mar jaoon gi piyasi nahi Mangon gi pani
asghar ki mujhe piyas jo yaad ati hai baba
Jaab yaad sakina as ko Teri ati hai baba
Jalte hui khemey k nazare hain nazar mein
Tanhai meri muat bani jati hai baba
Yaad atey hain wo Zulm or tasahadud
Jaab yaad sakina as .....

جب یاد سکینہؑ کو تیری آتی ہے بابا
سر زندان کی دیواروں سے ٹکراتی ہے بابا

کانوں سے ٹپکتا ہے لہو شانوں پہ میرے
ظالم کی اذیت مجھے تڑپاتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

مر جائوں گی پیاسی نہ کبھی مانگوں گی پانی
اصغرؑ کی مجھے پیاس جو یاد آتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

جب تک تیرے سینے پہ نہ سو جائے سکینہؑ
زنداں میں اُسے نیند کہاں آتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

ہے کون میرے پاس جیوں کس کے سہارے
تنہائی میری موت بنی جاتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

جلتے ہوئے خیموں کے نظارے ہیں نظر میں
یہ بات خیالوں سے کہاں جاتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

یاد آتے ہیں جب شمرِ ستمگر کے مظالم
یہ ننھی سی دُختر تیری گھبراتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔۔

دربارِ یزیدی میں بھلا کیسے میں جائوں
ہے چاک گریبان حیا آتی ہے بابا
جب یاد ۔۔۔۔