Ummat ne bohat aap ko tarrpaya hay bibi
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

Ya Fatima Zehra 
Ya umme Abiha

Ya Fatima Zehra 
Ya Umme Abiha  
Ya Fatima Zehra  
Ya Fatima Zehra 
Pehlu e shikasta 
Ya Fatima Zehra

1. Ummat ne bohut aapko tadpaya hai bibi 
   Har haq k liye aapko tarsaya hai bibi 
   Ghasib ne jo darbar me bulwaya hai bibi 
   Is dukh se larazne laga khud arsh khuda ka 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

2. Shabbir ki duniYa me wiladat se bhi pehle 
   Kehti thi ye zehra ke bohut sehti hu sadme 
   Bachha ye mera kok me bechaen bohut hai 
   Bachha mera kehta hai ke amma mai hu pyasa 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

3. Maa khana khilati hai to phir khate hai bache 
   Jaati hai jahaan maa wahi aajaate hain bachhe 
   Bin maa ke kabhi chaen nahi paate hai bachhe 
   Kaam aata hai bachho pe bohut maa ka sahara 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

4. Seene me azal se hi mere karbobala hai 
   Jaate hue Zehra ne yeh duniYa se kaha hai 
   Kya shaam me hona hai ye sab mujhko pata hai 
   Kat te hue sehra me hai Shabbir ka lasha
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

5. DuniYa se chali kehti hui binte payambar 
   Gham karbobala ka hai liye ye dil e muztar 
   Aata hai tasawur me mere shaam ka manzar 
   Allaha rakhe zainab o kulsum ka parda 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

6. Ye kaam raha sadiyo se bas ahle azaa ka 
   Pyaso ke liye behta raha ashkon ka dariYa 
   Shabbir ka pursa diYa Zehra ko hamesha 
   Shabbir ko do madar e Shabbir ka pursa 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

7. Maao se azaadaro ki Zehra ne kaha hai 
   Aashur ke maqsad ka bharam tumne rakha hai 
   Bachho ko azaadari par qurbaan kiYa hai 
   Mehshar me chukaungi mai karzaa ye tumhara 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

8. Ab dilse "Qamar" waris e zahra ko bulao 
   Paamaal ye marqad pe bohut ashk bahao 
   Ai muntaqim e karbobala parda uthao 
   Mohsin ki lahad par gaYa pehlu e shikasta 
   Ya Fatima Zehra (x2)

   Ya Fatima Zehra (x4)

یا فاطمہ زہراؑ . . . 
سینے میں لئے رنج و الم کرب و بلا کا . 
بابا سے ہے ملنے کو چلی امِ ابیحا . 
آنکھوں سے لہو بہتا ہے پہلو ہے شکستہ 

امت نے بہت آپکو تڑپایا ہے بی بی 
ہر حق کے لیے آپکو ترسایا ہے بی بی 
غاصب نے جو دربار میں بلوایا ہے بی بی 
اِس دُکھ سے لرزنے لگا خود عرش خدا کا 
یا فاطمہ زہراؑ . . . 

شبیرؑ کی دُنیا میں ولادت سے بھی پہلے 
کہتی تھی یہ زہراؑ كہ بہت سہتی ہو صدمے 
بچہ یہ میرا كوکھ میں بے چین بہت ہے 
بچہ میرا کہتا ہے كہ اماں میں ہو پیاسا 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

ماں كھانا کھلاتی ہے تو پِھر کھاتے ہیں بچے 
جاتی ہے جہاں ماں وہیں آجاتے ہیں بچے 
بن ماں كے کبھی چیں نہیں پاتے ہیں بچے 
کام آتا ہے بچوں کو بہت ماں کا سہارا 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

سینے میں ازل سے ہی میرے کرب و بلا ہے 
جاتے ہوئے زہراؑ نے دُنیا سے کہا ہے 
کیا شام میں ھونا ہے سب مجھکو پتہ ہے 
تپتے ہوئے صحرا میں ہے شبیرؑ کا لاشا
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

ؑدُنیا سے چلی کہتی ہوئی بنتِ پیمبر 
غم کرب وبلا کا ہے لیے یہ دِل مضطر
آتا ہے تصور میں میرے شام کا منظر 
اللہ رکھے زینبؑ و کلثومؑ کا پردہ 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

یہ کام رہا صدیوں سے بس اہل عزا کا 
پیاسوں كے لیے بہتا رہا اشکوں کا دریا 
شبیرؑ کا پُرْسَہ دیا زہراؑ کو ہمیشہ 
شبیرؑ کو دو مادرِ شبیرؑ کا پُرْسَہ 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

ماؤں سے عزاداروں کی زہراؑ نے کہا ہے 
عاشور كے مقصد کا بھرم تم نے رکھا ہے 
بچوں کو عزاداری پر قربان کیا ہے 
محشر میں چکاؤں گی میں قرضہ یہ تمہارا 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ 

اب دل سے قمر وارث زہراؑ کو بلاؤ 
پامال یہ مرقد پر بہت اَشْک بہاو 
اے منتقمِ کرب و بلا پردہ اٹھاؤ 
محسن کی لحد پر گیا پہلو بھی شکستہ 
یا فاطمہ زہراؑ . . . یا فاطمہ زہراؑ