Pukari masji e Koofa ujarr gaya Koofa
Efforts: shayan ghulami

پکاری مسجدِ کوفہ اُجڑگیا کوفہ
اٹھا امام کا سایہ اُجڑگیا کوفہ

بُجھا کے زہر میں خنجر کو ابنِ ملجم نے
سرِ علیؑ پہ جو ضربت لگائی ظالم نے
جہاں میں چھایا اندھیرا  اُجڑگیا کوفہ

یہ کیسی ضرب لگی ٹوٹنے لگیں سانسیں
دو نیم ہوگیا سرخوں سے بھرگئیں آنکھیں
شہید ہو گئے مولاؑ  اُجڑگیا کوفہ

نمازِ صبح کے دوراں بپا ہوا محشر 
ستم کی تیغ سے شق ہوگیا سرِ حیدرؑ 
لہو میں تر ہے مصلیٰ  اُجڑگیا کوفہ

خدا کے شیر کو آئی جو آخری ہچکی
حسنؑ حسینؑ پہ چھائی فضا یتیمی کی
ہے غش میں زینبِ کبریٗ  اُجڑگیا کوفہ

پہاڑ ٹوٹا ہے عباسؑ پر مصیبت کا
یہ دن ہے زینبؑ و کلثومؑ پر قیامت کا
غموں میں غرق ہے کنبہ  اُجڑگیا کوفہ

ہوئی جہان سے رحلت جو شاہ عالم کی
یتیم ہوگئی امت رسولِ اکرمﷺ کی
امامِ وقت سدھارا  اُجڑگیا کوفہ

مجیبؔ شبرؑو شبیرؑ خون روتے ہیں 
کلیجے زینبؑ و کلثومؑ کے لرزتے ہیں 
اُداس ہوگیا کعبہ  اُجڑگیا کوفہ

شاعرِ اہلیبیت: مجیبؔ علی پوری

Pukari Masjid e Koofa ujarr gaya Koofa
Utha Imam ka saaya ujarr gaya Koofa

Bujha se zahr may khanjar ko ibne Muljim ne
Sar e Ali pe jo zarbat lagayi zaalim ne
Jahan pe chaaya andhera ujar gaya Koofa

Ye kaisi zarb lagi tootnay lageen sansain
Do neem ho gaya sar khoon se bhar gayeen ankhain
Shaheed ho gaya Maula ujarr gaya Koofa

Namaz e subha ke doraa bapa hua mehshar
Sitam ki taigh se shaq ho gaya sar e Haider
Lahoo se tar hay musalla ujarr gaya Koofa

Khuda ke shair ko aayi jo aakhri hichki
Hasan Hussain pe chaayi fiza yateemi ki
Hay ghash may Zainab e Kubra ujarr gaya Koofa

Paharr toota hay Abbas par museebat ka
Ye din hay Zainab o Kulsoom par qayamat ka
Ghamoo may gharq hay kunba ujarr gaya Koofa

Hui jahan se rehlat jo Shah e aalam ki
Yateem ho gayi ummat Rasool e Akram ki
Imam e waqt sidhara ujarr gaya Koofa

Mujeeb Shabbar o Shabbir khoon rotay hain
Kalejay Zainab o Kulsoom ke laraztay hain
Udas ho gaya Kaaba ujarr gaya Koofa

(Mujeeb Alipuri)