Nanhay Asghar aa jao aey meray dilbar aa jao
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

ننھے اصغرؑ آ جاؤ اے میرے دلبر آ جاؤ

دیر سے مادر ڈھونڈ رہی ہے
راہ تمہاری دیکھ رہی ہے
دودھ پلا کر لوری سُناؤں
رن سے پلٹ کر آ جاؤ

بعد تیرے اب کوئی نہیں ہے
ماں کا سہارا کوئی نہیں ہے
رن سے پلٹ کر پانی پی کر
فاتح بن کر آ جاؤ

قاسمِؑ نوشاہ پاس نہیں ہے
جینے کی کوئی آس نہیں ہے
سینے پہ برچھی کھا کے تڑپ کر
مر گئے اکبرؑ آ جاؤ

بالی سکینہؑ در پہ کھڑی ہے
راہ چچا کی دیکھ رہی ہے
مشک چھدا کر مر گئے عمّو
بیکس و مضطر آ جاؤ

رن میں اکیلے شاہؑ کھڑے ہیں
چاروں طرف سب دشمنِ دیں ہیں
تیروں سے چھلنی ہو گیا ہئے ہئے
جسمِ مطہّر آ جاؤ

عصر کا یہ ہنگام ہے بیٹا
حشر سے پہلے حشر یہ ہو گا
خنجر اٹھا کرسینہءِ شہؑ پر
ہو گا ستمگر آ جاؤ

ہائے غضب کیا ظلم ہوا ہے
سینہءِ شہؑ پر شمر چڑھا ہے
سجدہءِ آخر میں اب ہو گا
تن سے جدا سر آ جاؤ

سویا رضا تھا جانِ حزیں سے
آئی صدا کربل کی زمیں سے
ثانئِ حامد ذاکرِ سرورؑ
بیکس و مضطر آ جاؤ

Nanhay Asghar aa jao
Aey meray dilbar aa jao

Dair se madar dhoond rahi hay
Raah tumhari dekh rahi hay
Dhoodh pila kar lori sunayoon
Ran se palat kar aa jao

Baad teray ab koi nahi hay
Maa ka sahara koi nahi hay
...
...

Qasim e nausha paas nahi hay
Jeenay ki koi aas nahi hay
Seenay pe barchi kha ke tarap kar
Mar gaye Akbar aa jao

Bali Sakina dar pe kharri hay
Raah chahcha ki dekh rahi hay
Mashk chidda kar mar gaye ammo
Bekas o muztar aa jao

Ran may akailay Shah kharray hain
Charon taraf sab dushman e deen hain
Teeron se chalni ho gaya haey haey
Jism e mutahhar aa jao

Asar ka ye hangam hay baita
Hashr se pehlay hashr ye ho ga
Khanjar utha kar seenay e sheh par
Ho ga sitamgar aa jao

Haey ghazab kia zulm hua hay
Seena e sheh par Shimr charrha hay
Sajda e aakhir may ab ho ga
Tan se juda sar aa jao

Sooya Raza tha jaan e hazeen se
Aayi sada Karbal ki zameen se
Sani e Hamid zaakir e Sarwar
Bekas o baypar aa jao