Haey Hussain pyase Hussain
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)

Damishq may jo ghariboon ka qafila pohoncha
Yazeed e nehs ne darbar may bula bhaija
Behan se Sheh ki shahdat ka waqea poocha
Tarrap ke bint e Ali(as) ne Yazeed se ye kaha

Zameen ki goad may Islam ka sitara hay (x2)
Meray ghareeb ko lakhon ne mil ke mara hay
Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)


Kaha Yazeed se Zainab(sa) ne aey sitam mara
Ghazab kia teray lashkar ne roz e aashoora
Meray Hussain(as) ko jangal may ghair kar mara
Ali(as) ka kar diya barbad ghar ka ghar sara

Jo be kafan hay abhi tak Ali(as) ka pyara hay (x2)
Meray ghareeb ko lakhon ne mil ke mara hay
Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)


Suhag ujrra kisi ka kisi ki kookh jali
Kisi ka jal gaya daman rida kisi ki jali
Kisi ki mang may Karb o bala ki khak urri
Nabi(sawaw) ki aal hay zindan may ya Ali(as) madadi

Jahan may Zainab e dilgeer(sa) be sahara hay
Meray ghareeb ko lakhon ne mil ke mara hay
Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)


Shaheed ho gaye Abbas(as) Qasim(as) o Akbar(as)
Woh meray Aon o Muhammad(as) wo meray noor e nazar
May tujh ko dhoondo kahan be zuban Ali Asghar(as)
Batao bibiyo may rowon aaj kis kis par

Shaqi ne sibt e payambar(as) ka sar utara hay (x2)
Meray ghareeb ko lakhon ne mil ke mara hay
Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)


Ye ranj o gham sitam o jor aur jafa kab tak
Rasool zadiyan balway may berida kab tak
Rahay gi qaid may aulad e Murtaza(as) kab tak
Nabi ki aal pe ye zulm e na rawa kab tak

Mujhe to moat hi aalam may ab gawara hay (x2)
Meray ghareeb ko lakhon ne mil ke mara hay
Haey Hussain(as) pyase Hussain(as) (x2)

ہائے حسینؑ  پیاسے حسینؑ

دمشق میں جو غریبوں کا قافلہ پہنچا 
یزیدِ نحس نے دربار میں بلا بھیجا 
بہن سے شہہؑ کی شہادت کا واقعہ پوچھا 
تڑپ كے بنت علیؑ نے یزید سے یہ کہا
 
زمیں کی گود میں اسلام کا ستارہ ہے 
میرے غریب کو لاکھوں نے مل كے مارا ہے 
ہائے حسینؑ پیاسے حسینؑ


کہا یزید سے زینبؑ نے اے ستم آرا 
غضب کیا تیرے لشکر نے روز عاشورہ
میرے حسینؑ کو جنگل میں گھیر کر مارا 
علیؑ کا کر دیا برباد گھر کا گھر سارا
 
جو بے کفن ہے ابھی تک علیؑ کا پیارا ہے
میرے غریب کو لاکھوں نے مل كے مارا ہے 
ہائے حسینؑ پیاسے حسینؑ


سہاگ اجڑا کسی کا کسی کی کوکھ جلی 
کسی کا جل گیا دامن ردا کسی کی جلی 
کسی کی مانگ میں کرب و بلا کی خاک اڑی 
نبی کی آلؑ ہے زنداں میں یا علیؑ مددی 

جہاں میں زینبِؑ دل گیر بے سہارا ہے 
میرے غریب کو لاکھوں نے مل كے مارا ہے 
ہائے حسینؑ پیاسے حسینؑ 


شہید ہو گئے عباسؑ قاسمؑ و اکبرؑ 
وہ میرے عون و محمدؑ وہ میرے نورِ نظر 
میں تجھ کو ڈھونڈوں کہاں بے زُبان علی اصغرؑ 
بتاؤ بیبیوں میں روؤں آج کِس کِس پر 

شقی نے سبطِ پیمبرؑ کا سَر اُتارا ہے 
میرے غریب کو لاکھوں نے مل كے مارا ہے 
ہائے حسینؑ پیاسے حسینؑ 


یہ رنج و غم ستم و جور اور جفا کب تک 
رسول زادیاں بلوے میں بے ردا کب تک 
رہے گی قید میں اولادِ مرتضیؑ کب تک 
نبی کی آل پہ یہ ظلمِ نا روا کب تک 

مجھے تو موت ہی عالم میں اب گوارہ ہے 
میرے غریب کو لاکھوں نے مل كے مارا ہے 
ہائے حسینؑ پیاسے حسینؑ