Ab to aa jao shahanshah e wafa
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



اب تو آ جاؤ شہنشاہِ وفا
رو رو کہتی تھی سکینہؑ رن میں
لٹ گئی ثانیءِ زہراؑ کی ردا

شمر نے مارے تمانچے ہیں میرے گالوں پر
جھڑکیاں دے کے اٹھایا ہے مجھے
بابا کی لاش پہ رونے نہ دیا

چھین لی سب کے ردائیں اور جلائے خیمے
ایسے لُوٹا ہے ستمگاروں نے
نہ کیا آلِ محمدؐ کا حیا

شام جانے کے لئے قافلہ تیار ہے جو
اُن میں اِک رات کی بیاہی ہے کھڑی
ہاتھوں سے اترا نہیں رنگِ حنا

توڑ دی مار کے اکبرؑ کے جگر میں برچھی
اور ستمگر نے کہا مولاؑ سے
یہ سُنا ہے کہ تو صابر ہے بڑا

صاحبِ عصرؑ یہ الفاظ ادا کرتے ہیں
کوئی خوبی یہ نہیں اختر کی
اِس کے نوحوں میں ہے زہراؑ کی دعا

Ab to aa jao Shahanshah-e-Wafa
Ro ro kehti thi Sakina ran me
Lut gayi sani-e-Zahra ki rida

Shimr ne maaray tamachay hain mere kano pe
Jhirrkiyan de ke uthaya hay mujhe (x2)
Baba ki lash pe sonay na diya

Cheen li sab ki ridayain aur jalaye khaime
Aisa loota hay musalmano ne (x2)
Na kia Aal-e-Muhammad ka haya

Tum ko Abbas ki taqat pe bharosa tha bohat
Qaid honay se bachaye tum ko (x2)
Aa ke yeh Shimr ne Zainab se kaha

Shaam janay ke liye qafila tayyar hay jo
Un me ik raat ki byahi hay kharri (x2)
Hathon se utra nahi rang-e-hina

Toarr di mar ke Akbar ke jigar may barchi
Aur sitamgar ne kaha Maula se (x2)
Ye suna hay ke tu sabir hay barra

Sahib-ul-Asr yeh alfaz ata kartay hain
Koi khoobi ye nahi Akhtar ki (x2)
Is ke nohon may hay Zahra ki dua