Shab may ashoor ki Sughra ne yeh socha ho ga
Efforts: Mrs. Nighat Rizwan

شب میں عاشور کی صغراؑ نے یہ سوچا ہوگا
آج سہرا علی اکبرؑ نے سجایا ہوگا

مہندی ہاتھوں میں سکینہؑ نے لگائی  ہو گی
نیگ میں بھائی سے کیا کیا نہیں پایا ہوگا

اپنی آنکھوں میں میرے بھائی نے سرمے کی جگہ
ہے یقیں خاکِ نجف کو ہی لگایا ہوگا

پھول دھونے کے لئے سہرے کے بابا نے میرے 
آبِ کوثر کو فرشتوں سے منگایا ہوگا

زیب تن کر کے محمدؐ کی عبا بھائی میرا
باندھ کر سہرا محمدؐ نظر آتا ہوگا

پاؤں میں دولہا کے نعلین پنہانے کے لئے
حضرت جونؑ کو بابا نے بلایا ہوگا

سب سے چھوٹا علی اصغر ؑ ہے تو اماں نے اسے
آکے گہوارے میں شہبالا بنایا ہوگا

گھر سے بارات کچھ اس شان سے نکلی ہوگی
چچا عباسؑ نے گھوڑے پہ بٹھایا ہو گا

جوڑا شادی کا تو ریحان خیالوں کی ہے بات
مان نے چادر کا کفن بھی نہ اڑھایا ہوگا