Kaha bano ne yeh ro kar yehi gham dil ko khata hay
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi



کہا بانو نے یہ روکر یہی غم دل کو کھاتا ہے
جو اکبرؑ بھول جاتا ہے تو اصغرؑ یاد آتا ہے

شہ مظلوم پر منظر یہ کیسا بے کسی کا ہے
کبھی اکبرؑ اٹھاتا ہے کبھی اصغرؑ کو لاتا ہے

لگا جب تیر اصغرؑ کوسکینہؑ رو کے چلائی
کہیں اس طرح بچوں کو کوئی پانی پلاتا ہے

خدا کے کام میں مصروف کتنا لعل زہراؑ کا
کبھی خیموں میں آتا ہے کبھی مقتل کو جاتا ہے 

میں اکثر رات بھر پہلو میں تجھ کو ڈھونڈتی اصغرؑ 
تیرا وہ خوں بھرا چہرہ نہیں آنکھوں سے جاتا ہے

بڑی مشکل سمیٹا ہے حسنؑ کے لعل کو شاہؑ نے
ہر اک ٹکرے کو چوما ہے کبھی سینے لگایا ہے