Zainab lipat ke roeyeen Abbas ke nishaan se
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

زینبؑ لپٹ کر روئيں عباسؑ کے نشاں سے
ایسا غیور بھیا لاؤں گی پھر کہاں سے

اک بار تم چچا جان خیموں میں لوٹ آؤ
شکوہ نہ پھر سنو گے پانی کا اس زباں سے
ایسا غیور بھیا لاؤں گی پھر کہاں سے

شیر علی کا لاشہ شبیر لے کے آۓ
ڈھونڈے گی اب سکینہ بازو کہاں کہاں سے
ایسا غیور بھیا لاؤں گی پھر کہاں سے

بھولے نہیں زمانہ تشہیر بنت زہرا
غیرت تڑپ رہی تھی عباسؑ کے نشاں سے
ایسا غیور بھیا لاؤں گی پھر کہاں سے

قمری علی کا لاشہ اس وقت تڑپ گیا تھا
باندھا جو ظالموں نے زینبؑ کو رسیوں سے
ایسا غیور بھیا لاؤں گی پھر کہاں سے