Aati hay Sakina ki sada karb o bala se
Efforts: Syed-Rizwan Rizvi

آتی ہے سکینہؑ کی صدا کرب و بلا سے
عمو ہو کہاں آپ کے ہم ہیں اب بھی پیاسے

پھٹتا ہے جگر پیاس یہ لے لے گی میری جان
بچ بھی گئ گر شمر کے درّوں کی جفا سے

بے شیر کے ہونٹوں پہ نہیں پیاس کا شکوہ
تر کر دیا اعداء نے گلا تیر جفا سے

جو رن کو گیا رن سے کہاں آیا پلٹ کر
دیتی ہیں پھوپھی جان مجھے یوں ہی دلاسے

سنتی ہوں یتیموں کی دعا رد نہيں ہوتی
یارب مجھے ملوادے پھر ایک بار چچا سے

ماں بہنیں کھلے سر ہيں لہو روتی ہیں آنکھیں
اٹھتا نہیں بھائ کا میرے سر ہاۓ حیا سے

عمو ہو کہاں آپ کے ہم ہیں ابھی پیاسے
آتی ہے سکینہؑ کی صدا کرب و بلا سے

aati hai sakina ki sada karbobala se
ammu ho kahan aao ke hum hai abhi pyase
aati hai....

atka hai jigar pyas ye le-legi meri jaan
bach bhi gayi gar shimr ke durro ki saza se
aati hai....

baysheer ke honton pe nahi pyas ka shikwa
tar kardiya aada ne gala teere jafa se
aati hai....

jo ran ko gaya ran se kahan aaya palat kar
deti hai phuphi jaan mujhe yuhin dilaase
aati hai....

sunti hoo yateemo ki dua radh nahi hoti
ya rab mujhe milwaade phir ek baar chacha se
aati hai....

maa behne khule sar hai lahoo roti hai aankhein
uth-ta nahi bhai ka mera sar hai haya se
aati hai....