BHIKARI BUN KE AYA HOUN
Efforts: KALAAM: SAYYEDI AYAZ MUFTI

الہی تیری چوکھٹ پر بھکاری بن کے آیا ہوں 
TAQTEED
ہزج مثمن سالم
مفاعیلن مفاعیلن مفاعیلن مفاعیلن 

الہی تیری چوکھٹ پر بھکاری بن کے آیا ہوں..
ہوں سر     تا    پا خطا مولا سوالی بنکے آیا ہوں

خدایا رحم کر سب پر کہ تو ہی  رحم والا ہے 
تو ہی غفار ہے رحمان ہے اولیٰ و اعلی ٰ ہے
نہیں تیرا کفو کوئی ، نہ تجھ سے کوئی بالا ہے 
تو ہی حاجت روا سب کا یہ تیری شانِ والا ہے 
ترے در پہ سرِ عصیاں میں مولا رکھنے آیا ہوں




چلادے امت ِ احمد کو پھر سے سیدھی رہ مولا 
انہی کے راہ پر جن پہ ترا انعام ہے مولا 
تمامی راست اصحابہ ، امام و پنجتن مولا 
بچانا انکے رستے سے رہے مغضوب جو مولا 
میں انعمت علیھم کا وظیفہ پڑھنےآیاہوں

بھکاری ہوں مرے ہاتھوں میں ہے کاسہ ٗ ندامت کا
کہاں سر پر عمامہ ہے وہ دنیا کی امامت کا 
سبق بھولا ہوں میں کب سے عدالت کا شجاعت کا 
کہاں اب یاد ہے مجھکو سبق جو تھا نیابت کا 
میں استغفار کے کلمے دوبارہ کہنے آیا ہوں 

کیا ہے غفلت و عصیاں نے دل تاریک تر میرا 
,شکستہ دل ، تنِ مردہ اور آنکھیں میری نمدیدہ 
میں مایوسی کی دلدل میں ہوں اور رہتا ہوں رنجیدہ 
ارادے مضمحل ہیں اور قدم مرے ہیں لغزیدہ
دلِ مسموم کو مولا مصفیٰ کرنے آیا ہوں 
ندامت ہی ندامت ہے اے مولا ہاتھ میں میرے 
برے ہیں یا بھلے ہیں جیسے بھی ہیں بندے ہیں تیرے
مجھے آداب سکھلادے ، ترےبندوں سے ملنے کے 
خدایا دور کر سب کو ۔ غرور و طنز کرنے سے 
سراپا عجز ہوں تحفہ یہی میں لیکے آیا ہوں

نبیوں کی نبوت کا ، اماموں کی امامت کا 
تجھے ہے واسطہ مولا نواسوں کی شہادت کا 
تجھے ہے واسطہ آلِ محمد سے مودت کا 
شجاعت کا علی کی اور زہرہ کی طہارت کا 
میں ان اصحاب کا مولا وسیلہ لے کے آیا ہوں  

جو تیرے عشق میں  روئیں ہمیں آنکھیں وہی دے دے 
جو راتوں کو اٹھائے تری خاطر ،   وہ کسک دے دے
جو دل سے مرے طمع حرص ِ دنیا ختم تر کردے 
جو ترے ذکر پر چھلکیں ۔ مجھے آنسو عطا کردے 
میں ان الحمد والنعمہ کا نغمہ لیکے آیا ہوں 

غلافِ کعبہ کے آنچل میں ہوں گریاں کناں مولا 
یقیں ہے سب کو بخشے گا تری ہے ذات جل اللہ 
نہیں کوئی سوا تیرے مرے اللہ مرے اللہ 
محمد عبدِ خاص الخاص ہیں اور ہیں رسول اللہ 
نہیں کرتا ہے رد جو تو وسیلہ لے کے آیا ہوں

میں خالی ہاتھ آیا تھا میں خالی ہاتھ آیا ہوں 
کہ لاا لہ الا انت پڑھنے خاص لایا ہوں 
 ادا سنت تیر ی کرنے درودِ خاص لایا ہوں 
ورفعنا لک ذکرک کی مالا جپنے آیا ہوں
لئے آنسو ندامت کے میں سجدہ دینے آیا ہوں

NA